دھرنا سیاست کی کہانی

علالت اور دھرنا سیاست کا ایک مرحلہ مکمل ہوا، نواز شریف علاج کی غرض سے لندن پہنچ گئے جبکہ مولانا

مسیحا کی تلاش

گزشتہ برس جس افغان بچی کو اپنی بوڑھی ماں کے ہمراہ گلیوں میں کوڑا سمیٹتے دیکھا کرتا تھا گزشتہ روز

آذر بائیجان میں ملتان

”چلیں آئیں اِچری شہر(Icherisheher) چلتے ہیں“۔ باکو میں ہمارا تیسرا یا چوتھا دن تھا اور غیر سرکاری طور پر اب

سفید فام دہشت گردی

2 اکتوبر2017 کی صبح تقریباً ڈیڑھ بجے کا وہ وقت میری یادداشت سے کبھی محو نہیں ہو سکتا جب میں

مرسوں مرسوں سے مارسوں مارسوں تک۔۔۔

مارسوں۔۔۔۔میرے چھ سالہ صحافتی کرئیر کا یہ پہلا کالم ہے جسے شب 12بجکر 17 منٹ پر تحریر کر رہی ہوں،

سیاسی تحریکیں اور عوام

سیاسی تحریکوں کی اثرانگیزی کے بارے میں ایک سوال پرجمیعت علمائے اسلام کے سیکرٹری جنرل مولانا عبد الغفور حیدری نے

علالت اور دھرنا سیاست

علالت اور دھرنا آج پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ بنا ہوا ہے، کشمیر جو ہماری شہ رگ ہے، بابری

ہم اور ہمارا معاشرہ

ہماری قومی زندگی سرسید کے بغیر نامکمل ہے۔ وہ ہماری تحریک آزادی کے جد امجد اور بنیاد ہیں۔ وہ مسلمانانِ

شہری بابو

پرانی فلمیں دیکھنے والوں نے اکثر یہ سچویشن دیکھی ہوگی کہ ایک شہری بابو گاؤں آتا ہے اور وہاں کی

ٹماٹر کھاتے عوام

گزشتہ روز بہت ڈھونڈنے کے بعد ایک سبزی والے کے پاس ٹماٹر کے دیدار ہوئے، قیمت پوچھی تو اس نے

ٹاپ اسٹوریز