کابینہ اجلاس: وزراء کے بیرون ملک علاج پر پابندی کا فیصلہ

نومبر ۸, ۲۰۱۸
کابینہ اجلاس:وزراء کے بیرون ملک علاج پر پابندی کا فیصلہ

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہونے والے اجلاس میں وفاقی کابینہ نے 21 نکاتی ایجنڈے کی منظوری دے دی۔ اجلا س میں ارکان کابینہ کے بیرون ملک علاج  پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق فیصلے کا اطلاق وفاقی وزرا اور وزرائے مملکت پر بھی ہوگا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گزشتہ دورحکومت میں میڈیکل دوروں پر ملکی خزانے کی بہت زیادہ رقم خرچ ہوئی تھی جس کے بعد موجودہ حکومت نے ان پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیراعظم کی زیر صدارت اسلام آباد میں کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں امن وامان کی مجموعی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔

وزیراعظم نے دورہ چین بالخصوص پاک چین راہداری کے معاملے پر کابینہ کو اعتماد میں لیا۔  ذرائع کے مطابق اسد عمر نے چین میں ہونے کے معاہدوں کی تفصیلات سے کابینہ کو آگاہ کیا۔

وزیرمملکت داخلہ شہریارآفریدی نے احتجاج میں ہونے والے نقصانات پر بریفنگ دی اور کابینہ کو قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے فیصلوں پر اعتماد میں لیا گیا اور کابینہ کو نقصانات کا معاوضہ ادا کرنے سے متعلق آگاہ کیا گیا۔

اجلاس کے 21 نکاتی ایجنڈے میں برطانیہ سے مجرموں کے تبادلے کی منظوری بھی شامل تھا۔

انجینئرنگ ترقیاتی بورڈ کی منسوخی اور نیشنل بینک اور تاجکستان بینک میں تعاون کا معاملہ بھی ایجنڈے کا حصہ تھا۔ چیئرمین ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان اور چیف ایگزیکٹو  آف پبلک پرائیویٹ اتھارٹی کی تقرری بھی کابینہ کے ایجنڈے میں شامل تھا۔

منظور کیے گئے نکات میں مختلف مقدمات میں ملزمان کو حفاظتی تحویل میں لینا، پاکستان اور سری لنکا کے درمیان کوسٹ گارڈ کے حوالے سے اور  پاک سوڈان کے سیاحت اور جنگلی حیات کے  تحفظ کے حوالے سے معاہدے کی منظوری، سیلولر کمپنی ہواوے کے ساتھ کمیونیکشین ٹیکنالوجی ٹیلنٹ پروگرام کے معاہدے کی منظوری اورپاکستان اور نائجیریا کے درمیان سفارتی تعلقات کا فروغ، نئی نجی ایئر لائن لبرٹی ائیر کو لائسنس جاری کرنے کی منظوری، ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان کے نئے چیئرمین کے تقرر کی منظوری، وزارت خزانہ کے نئے ادارے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے چیف ایگزیکٹو کے تقرر کی سمری منظوری،اسٹیٹ بینک اور تاجکستان کے مرکزی بینک کے درمیان مفاہمت کی دستاویز پر دستخط کی منظوری، 2017 کی پارلیمنٹیرینز اور ٹیکس دہندگان کی ٹیکس ڈائریکٹری جاری کرنے کی منظوری،انجینئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ کی تنظییم نو کی منظوری کا فیصلہ واپس لینا سمیت دیگر اہم نکات شامل ہیں۔

اجلاس میں وفاقی کابینہ کے گزشتہ اجلاسوں کے فیصلوں پر عملدرآمد کا جائزہ لیا گیا۔

کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے گزشتہ فیصلوں کی توثیق کردی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز