’ملزم آصف علی زرداری حاضر ہوں‘


کراچی: منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کے لیے سابق صدر اور پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین  مقررہ وقت پربینکنگ کورٹ نہیں پہنچ سکے اور کمرہ عدالت میں ملزم آصف علی زرداری حاضر ہوں کی صدائیں لگتی رہیں۔

وکلا نے عدالت سے درخواست کی کہ سابق صدر آرہے ہیں۔ سابق صدر تاخیر سے عدالت پہنچے اور حاضری لگائے بغیر ہی روانہ ہوگئے۔

منی لانڈرنگ کیس میں پیپلزپارٹی کی نفیسہ شاہ اور فریال تالپور، علی مجید، نمر مجید، مصطفی ذوالقرنین اور دیگر پیش نامزد ملزمان پیش ہوئے۔

بینکنگ کورٹ نے فریال تالپور، نمر مجید، سمیت دیگر کی عبوری ضمانت میں توسیع کردی ہے۔

تفتیشی افسر نے بتایا کہ مفرور ملزمان کو اشتہاری قرار دینے کیلئے قانونی تقاضے پورے کیے جا رہے ہیں اور ملزمان کے گھروں پر اشتہارات چسپاں کر دیے ہیں۔

افسر کا کہنا تھا کہ ملزمان کی جائیداد کی معلومات کے لیے متعلقہ کمشنر کو خطوط لکھ دیے گئے ہیں۔

عدالت نے مفرور ملزمان کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے تفتیشی افسر کو حکم دیا ہے کہ ضابطے کی کارروائی جلد مکمل کی جائے۔

عدالت نے کیس کی سماعت 10 دسمبر تک ملتوی کردی۔

پاکستان پیپلزپارٹی کی رہنما نفیسہ شاہ نے ذرائع ابلاغ سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ بینکنگ کورٹ ٹرائل کورٹ ہے، انصاف کا تقاضہ یہ کے کوئی بھی کیس شروع ہو وہ ٹرائل کورٹ سے شروع ہو۔

انہوں نے کہا کہ المیہ یہ کے سپریم کورٹ نے بھی جی آئی ٹی تشکیل دے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر سپریم کورٹ اس کیس کو دیکھے گی تو جس کا جوریس ڈیکشن ہے اس کا تو کوئی کردار نہیں رہا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز