منی لانڈرنگ کیس، عبدالغنی اور انور مجید کی معصوم بننے کی کوشش

فوٹو: فائل

اسلام آباد: منی لانڈرنگ اور جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں ملزمان عبدالغنی مجید اور انور مجید نے اپنے آپ کو معصوم قرار دے دیا ہے۔

منی لانڈرکیس کے ملزمان اور اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید اور عبدالغنی مجید کی جانب سے سپریم کورٹ میں جواب جمع کرا دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں دونوں ملزمان سے عدالت سے جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی) کی رپورٹ مسترد کرنے کی استدعا کی ہے۔

ملزمان نے اپنے جواب میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ جے آئی ٹی کے پاس کوئی بنیاد نہیں کہ وہ معاملہ قومی احتساب بیورو (نیب) کو ارسال کرنے کی سفارش کرتی اور جے آئی ٹی کی کسی بھی سفارش کی منظوری دینا بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہوگی۔

جواب میں کہا گیا ہے کہ جے آئی ٹی کی ایگزیکٹیو سمری اور حتمی رپورٹ کے چار والیم فراہم کیے گئے ہیں جب کہ جن 924 لوگوں کے بیان ریکارڈ کیے گئے ہیں نہ تو اُن کے نام فراہم نہیں کیے گئے اور نہ ہی جس ریکارڈ کا جائزہ لیا گیا وہ فراہم کیا گیا۔

ملزمان نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ ان حالات میں وہ جے آئی ٹی رپورٹ پر مفصل جواب دینے سے قاصر ہیں جب کہ رپورٹ کے ساتھ کوئی مواد یا دستاویزات نہیں جو الزامات کی تائید کرے اس لیے جے آئی ٹی رپورٹ میں لگائے گئے ہر الزام میں وہ معصوم ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز