مجھے کسی کی ڈکٹیشن کی ضرورت نہیں، اسد قیصر

پاک بھارت کشیدگی، اسپیکر قومی اسمبلی کا 178 پارلیمان کو خط | ہم نیوز

صوابی: اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا ہے کہ وزیر ریلوے شیخ رشید کی اپنی پارٹی ہے، ان کی اپنی مرضی ہے وہ جو بھی کہیں، میں اپنی پارٹی کے اصولوں کے مطابق چلوں گا۔

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے صوابی میں ڈسٹرکٹ جیل کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب میں شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں اسمبلی کے طے شدہ ضوابط کے تحت کام کروں گا، کسی کی ڈکٹیشن کی ضرورت نہیں ہے، تمام معاملات پر وزیراعظم عمران خان سے بات کروں گا۔

خیال رہے کہ وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے آج پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں ممبر شپ کے معاملے پر اسپیکر قومی اسمبلی کے کردار کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اسپیکر کا کردار پوسٹ آفس جیسا ہے اور اسپیکر کا کسی کو پبلک اکاونٹس کمیٹی کا رکن بنانے سے کوئی تعلق نہیں۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پی اے سی ممبرز کی تبدیلی کوئی مسئلہ نہیں ہے اس کا اختیار پارٹی ہیڈ کے پاس ہے اور میں پبلک اکاونٹس کمیٹی کا رکن بن چکا ہوں۔ وزیر ریلوے نے کہا کہ شہباز شریف بطور پی اے سی چئیرمین عوام کو بھی منظور نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو کوئی نئی بیماری نہیں ہے، 20 سال پہلے بھی ضمانت کے لئے یہی بیماریاں تھیں، نواز شریف ہو یا زرداری ہو کسی کو این آر او نہیں ملے گا۔ شیخ رشید نے کہا کہ شریف برادران کو20 سال پہلے بھی یہی بیماری تھیں، یہ ساری بیماری ملک سے بھاگنے کے لیے نہیں، قطری سے لے کر پتھری تک کی سیاست ختم ہونے جارہی ہے۔

وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ شاہد خاقان عباسی کے خلاف انکوائیریز چل رہی ہیں لیکن وہ ملک سے باہر ہے اور بھی بہت لوگ جلد ملک سے باہر جائیں گے قانون سب کے لئے برابر ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز