نیب کارروائیوں میں کسی کو استثنیٰ حاصل نہیں، ترجمان

ایل این جی کیس: نیب کو شاہد خاقان کیخلاف وعدہ معاف گواہ مل گئے

فائل فوٹو

اسلام آباد: سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف زرداری کے بیان پر قومی احتساب بیورو(نیب) نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ ادارے کے خلاف بے بنیاد پراپیگنڈہ کارروائیوں پر اثر انداز ہونے کی مذموم کوشش ہے۔

ترجمان نیب کا ایک اعلامیے میں کہنا تھا کہ نیب ایک قومی ادارہ ہے، کارروائیوں میں کسی کو استثنیٰ حاصل نہیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ نیب افسران کا تعلق کسی جماعت، فرد یا گروہ سے نہیں، نیب ہرقسم کی صوبائیت کی پرزور مذمت کرتا ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا کہ نیب قانون کے مطابق ملک بھر میں کارروئیاں کر رہا ہے،کسی صوبہ کو استثنیٰ نہیں۔

اعلامیے میں بتایا گیا کہ نیب کراچی کی ٹیم نے آغا سراج درانی کو آمدن سے زائد اثاثہ کیس میں اسلام آباد سے گرفتار کیا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ نیب ہیڈکوارٹرز کے آپریشن ڈویژن اور انٹیلی جنس ونگ نے چیئرمین نیب کی زیر نگرانی سپروائز کیا۔

اعلامیے میں کہا گیا کہ احتساب عدالت اسلام آباد میں ملزم سراج درانی کا تین دن کا راہداری ریمانڈ دیا۔

اعلامیے میں مزید کہا گیا کہ نیب نے ملزم سراج درانی کو کراچی منتقل کرنے کے انتظامات مکمل کر لیے ہیں، قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔

اس سے قبل ایک پریس کانفرنس کے دوران آصف علی زرداری نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی گرفتاری پر نیب کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

اس موقع پر ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ نظر ثانی درخواستوں  پر سپریم کورٹ کا فیصلہ قبول کرتے ہیں، ہم ماضی میں بھی کیسز دیکھ چکے ہیں، جیل میرا دوسرا گھر ہے اور بلاول بھی نہیں ڈرتا کیوں کہ وہ بھی میرا ہی بیٹا ہے، ہم پر گھیرا تنگ نہیں ہوسکتا۔

ایک سوال کے جواب میں کہا کہ میرا احتجاج عوام کو ملنے والی ناکافی سہولیات اور گیس بجلی کی بلوں پر ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز