پاک بھارت کشیدگی، سینکڑوں افراد محفوظ مقام پر منتقل

پاک بھارت کشیدگی، سینکڑوں افراد محفوظ مقام پر منتقل

فوٹو: فائل

مظفر آباد: پاک بھارت کشیدگی کے باعث آزاد جموں و کشمیر پر کی لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر رہائشی پذیر سینکڑوں افراد کو محفوظ مقام پر منتقل کر دیا گیا۔

گزشتہ روز پاکستان کی جانب سے بھارت کے دو جنگی جہاز مار گرائے گئے تھے جب کہ اس سے قبل اور بعد میں بھی لائن آف کنٹرول پر شدید جھڑپیں جاری رہیں۔

پاک بھارت جھڑپوں کے دوران گزشتہ روز چار مقامی افراد شہید ہو گئے تھے جب کہ متعدد افراد زخمی ہوئے۔ بھارتی فوج کی جارحانہ فائرنگ سے متعدد عمارتوں کو نقصان پہنچا جب کہ کھلنا سیکٹر پر فائرنگ سے ایک مسجد کو بھی نقصان پہنچا۔

مظفر آباد میں وزیر اسٹیٹ ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی آزاد کشمیر احمد رضا قادری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایل او سی پر ہندوستانی جارحیت کی وجہ سے صورتحال انتہائی کشیدہ ہے اور جن علاقوں کے رہائشی بھارتی فوج کی زد میں ہیں انہیں محفوظ مقام پر منتقل کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ جہلم ویلی سے 61 گھرانے منتقل کیے جا چکے ہیں جب کہ کچھ خاندان اپنے رشتے داروں کے گھر منتقل ہو گئے ہیں۔ کوٹلی میں 12 خاندان منتقل ہوئے ہیں جب کہ جہلم ویلی سے 196 سویلین کیمپوں میں منتقل ہو گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بھارت نےاگر لائن آف کنٹرول پارکی تو پاکستان ہماری ناک توڑ دیگا، سابق بھارتی چیف جسٹس

احمد رضا قادری نے بتایا کہ بھمبر سے 83 لوگوں کو محفوظ مقام پر منتقل کیا گیا ہے اور محکمہ صحت کے اہلکاروں کو بھی ذمہ داریاں تفویض کر دی گئی ہیں۔

انہوں ںے کہا کہ کسی بھی مزید امداد کی صورت میں نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی سے رابطے میں ہیں جب کہ وزیر اعظم آزاد کشمیر بھی دورہ مختصر کر کے واپس آ رہے ہیں تاہم وہ اس وقت فلائٹ آپریشن بند ہونے کی وجہ سے لندن میں رکے ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام کسی بھی جارحیت کا مقابلہ کرنے کے لیے پُر عزم ہیں۔

متعلقہ خبریں