ماڈل گرل  ایان علی کا وارنٹ گرفتاری کے خلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع

March 12, 2019

لاہور:ماڈل گرل  ایان علی نے وارنٹ گرفتاری کے خلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیاہے۔ ایان علی کی طرف سے  وارنٹ گرفتاری کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی گئی ہے۔

ایان علی نے درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ وہ اپنے خلاف لگائے گئے الزامات کا سامنا کرنے کے لئے ٹرائل عدالت  میں پیش ہونا چاہتی ہیں۔

ایان علی کے وکیل آفتاب باجوہ کی طرف سے دائر درخواست میں ایان علی نے کہا ہے کہ بے گناہی ثابت کرنے کے لئے کسٹم عدالت میں ہیش ہونے کاموقع دیا جائے۔

آئین کے آرٹیکل دس اے کے تحت شفاف ٹرائل ہر شہری کا بنیادی حق ہے۔ایان علی کی درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ کسٹم کورٹ کے جاری وارنٹ گرفتاری واپس لئے جائیں۔

کسٹم عدالت نے پیش نہ ہونے پر ایان علی کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر رکھے ہیں۔ ایان علی پر پانچ لاکھ ڈالر غیر قانونی طور پر بیرون ملک منتقل کرنے کے الزام کے تحت کسٹم حکام نے مقدمہ درج کر رکھا ہے۔

یاد رہے تین دن قبل راولپنڈی کی کسٹم عدالت نے کرنسی اسمگلنگ کیس میں ماڈل ایان علی کو اشتہاری قرار دے دیا تھا۔ عدالت نے ایان علی کی عدم حاضری پر ملزمہ کو اشتہاری قرار دیا۔

کرنسی اسمگلنگ کیس کی سماعت کسٹم عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے کی تھی۔ عدالت نے ماڈل کے قابل ضمانت اور ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری کیے تھے۔

عدالت نے وکلا اور پراسیکیوٹر سے ملزمہ کے کیس کی تمام تفصیلات اکٹھی کرنا شروع کر دی ہیں۔ عدالت نے گزشتہ سماعت  میں استتفسار کیا کہ بتایا جائے کہ کیا ملزمہ کے گھر پر اشتہار لگایا گیا یا نہیں۔ایان علی کے وکیل نے استفسار کیا کہ آئندہ کی تاریخ بتادیں، عدالت نے جواب دیا کہ آپ عدالتی حکم کا انتظار کریں۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ ماڈل ایان علی کو مسلسل عدالت طلب کیا جاتا رہا مگر وہ نہیں آئیں، ماڈل نے جو ایڈریس دیا وہ کراچی کی نجی سوسائٹی کا ہے۔

انسپکٹر کسٹم اسامہ منعم نے عدالت کو بتایا کہ میں جب کراچی گیا تو بتایا گیا کہ ماڈل بہت وقت سے یہاں آئی ہی نہیں۔

عدالت نے حکم دیا کہ سیشن جج کراچی کو خط لکھا جائے کہ مجسٹریٹ تعینات کیا جائے، تمام گواہ بلائے جائیں تاکہ شہادت قلمبند کی جائے۔

یہ بھی پڑھیے:منی لانڈرنگ کیس، ماڈل گرل ایان علی کو پیش کرنے کا حکم

یہ بھی پڑھیے:ایان علی کا کیس کی ازسرنو پیروی کا اعلان

راولپنڈی کی کسٹم عدالت نے اپنے حکمنامے میں لکھا کہ مجسٹریٹ ملزمہ کے فلیٹ کو فروخت کرنے سے روکنے کیلئے متعلقہ محکموں کو پابند کرے۔ عدالت نے ملزمہ کے اثاثہ جات ضبط کرنے کے احکامات بھی جاری کیے ہیں۔

عدالت آئندہ سماعت پر تمام گواہوں کو طلب کرتے ہوئے سماعت16 مارچ تک ملتوی کردی تھی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز