سیلکٹڈ حکومت کو چلانے میں نیب کا اہم کردار ہے، بلاول

لاڑکانہ: چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی سیاست نیب سے شروع اور نیب پر ختم ہوتی ہے۔

لاڑکانہ میں میڈیا سے گفتگو میں ان کا کہنا تھا کہ وفاقی وزیر پر بھی الزام ہے تاہم اس کو گرفتار نہیں کیا جاتا، یہ سلیکٹڈ احتساب ہے، سیلیکٹڈ حکومت کو چلانے میں نیب کا اہم کردار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میں نے گڑھی خدا بخش آنے کے لیے ٹرین کا سفر کیا، پیپلزپارٹی عوام کے حقوق اور وسائل چھیننے نہیں دے گی۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ عمران خان اپنے حلقے میں نہیں جاتے اور وہاں وقت نہیں دیتے، عوام گھوٹکی کے جلسے میں اسٹیج پر بیٹھے لوگوں کو پہچانیں یہ آپ کے حقوق چھیننا چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ صوبوں کے پاس ذمےداریاں زیادہ ہیں تو وسائل اور پیسا بھی زیادہ ہونا چاہیے، ملک کے عوام  ان کی شکلیں پہنچانیں یہ آپ کے حقوق چھیننا چاہتے ہیں، عمران خان کرپشن ختم کرنے میں سنجیدہ نہیں۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ افغانستان سے متعلق عمران خان کا بیان نامناسب تھا، ہم چاہتے ہیں کہ پڑوسی ملک کے مسئلے کا  کوئی نتیجہ نکلے۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان کے مستقبل کا فیصلہ افغان نمایندے ہی کرسکتے ہیں، وہان کے منتخب نمایندوں کے خلاف کسی کو بیان نہیں دینا چاہیے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ افغانستان میں کیسی حکومت ہونی چاہیے اس کا انتخاب وہاں کے لوگوں کو کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی عوام کی خدمت پریقین رکھتی ہے، ہم وفاق سے صوبے کا حصہ مانگ رہے ہیں، عوام کےحقوق چھیننےکی کوشش کی جارہی ہے تاہم ہم انہیں ایسا نہیں کرنے دیں گے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ نیب قانون کو سیاسی انتقام کے لیے بنایا گیا، خان صاحب سیاسی مخالفین کےلیےجھوٹے کیسز بناتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نیب کالا قانون ہے اور سیاسی مخالفین کے لیے بنایا گیا ہے، احتساب بلاتفریق ہونا چاہیے۔

چیئرمین پی پی پی نے کہا کہ کالعدم تنظیموں کےخلاف اقدامات کرنا ہوں گے، انتہا پسندوں کے خلاف ایکشن ہونا چاہیے۔

بلاول نے کہا کہ عمران خان اعجاز شاہ کو وفاقی وزیر بناکر کیا پیغام دینا چاہتے ہیں؟ ایسے وزیروں کو ہٹانے کے بجائے ایک اور ویسا ہی وزیر لایا گیا

ان کا کہنا تھا کہ ٹرین مارچ نہیں تھا، صرف ٹرین میں سفر کیا، اس کے سیاسی مقاصد نہیں تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز