بے نامی اکاؤنٹس کے بعد زرداری، فریال پر بے نامی جائیدادوں کا الزام

کراچی: بورڈ آف ریونیو سندھ نے  گیارہ ہزار ایکڑ پر مشتمل بے نامی جائیدادوں کی تفصیلات مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) کے حوالے کر دی ہیں جن میں پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کے نام بھی شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق جے آئی ٹی نے 187 بے نامی جائیدادوں کا کھوج لگایا تو مبینہ طور پر آصف زرداری  اور فریال تالپور سمیت  کئی افراد کے نام سامنے آگئے۔

اس ضمن میں بورڈ آف ریونیو سندھ کی رپورٹ کے مطابق سابق صدر آصف زرداری کے چار عزیزوں اور ساتھیوں کے نام بھی بے نامی جائیدادوں سے متعلق تفصیلات میں شامل ہیں اور مبینہ طور پر فریال تالپور اور مظفر ٹپی کے نام پر بے نامی پراپرٹیز بنانے کا شبہ ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مبینہ طور پر ابو بکر زرداری اور محمد علی شیخ کے نام پر بھی بے نامی جائیدادیں بنائی گئیں۔ جے آئی ٹی نے  آصف زرداری، فریال  تالپور اور دیگر تین اشخاص کے  نام پر موجود  زمینوں کی تفصیل بورڈ آف ریونیو سندھ  سے حاصل کرلی۔

187 بے نامی جا ئیدادوں میں مبینہ طور پر ملک ریاض اور ان کے اہل خانہ کی  پراپرٹیز بھی  شامل ہیں۔

جے آئی ٹی نے 8 مارچ کو بورڈ آف ریوینیو سندھ کو خطوط ارسال کئے تھے جن میں آصف زرداری، ملک ریاض  اور دیگر  کی جائیدادوں کی تفصیلات طلب کی گئی تھیں۔

سندھ بورڈ آف ریوینیو نے 13 مارچ کو جے آئی ٹی کو تمام تفصیلات  فراہم کردی تھیں۔

واضح رہے کہ جے آئی ٹی نے 8 مارچ کو بورڈ آف ریونیو سندھ کو خط ارسال کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ ملک ریاض اور ان کے اہل خانہ کے نام پر بے نامی جائیداد موجود ہیں۔ بورڈ آف ریونیو کی جانب سے لکھے گئے خط میں ملک ریاض، بینا ریاض اور احمد علی ریاض کے نام پر موجود جائیداد کی تفصیلات طلب کی گئی تھیں۔

ذرائع کے مطابق بے نامی جائیداد سے متعلق لکھے گئے خط میں صنم سلیم، پشمینہ ملک، زین ملک اور محمد اویس کی جائیداد کی تفصیلات بھی مانگی گئی تھیں۔

یہ بھی پڑھیں اومنی، زرداری اور بحریہ گروپ کی جائیدادیں منجمد کرنے کا حکم

بورڈ آف ریونیو سندھ نے 13 مارچ کو تمام تفصیلات جے آئی ٹی کو فراہم کر دی تھیں۔

اس سے قبل پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری کی امریکہ میں خفیہ جائیدادوں کی تفصیلات سامنے آئی تھیں۔

وفاقی وزیر برائے بحری امور اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنما علی زیدی آصف علی زرداری کی گمنام جائیدادوں کی دستاویزات منظر عام پر لائے تھے۔ علی زیدی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر آصف علی زرداری کی امریکہ میں جائیداد کی موجودگی کا دعویٰ کرتے ہوئے جائیدادوں کی دستاویزات بھی جاری کی تھیں۔

علی زیدی نے اپنے ٹویٹ میں کہا تھا کہ امریکہ میں موجود جائیدادوں کی پراپرٹی ٹیکس کی دستاویزات میں مالک کا نام آصف علی زرداری لکھا ہوا ہے۔ یہ جائیداد اپارٹمنٹ 37F، اسٹریٹ 72، 524 ایسٹ، نیویارک میں واقع ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز