جعلی اکاونٹس کیس، ندیم بھٹو 5 روزہ راہداری ریمانڈ پر نیب کے حوالے

سندھ کی اہم سیاسی شخصیت کے مبینہ فرنٹ مینوں کےخلاف 3 ریفرنس تیار

فائل فوٹو

سکھر: احتساب عدالت نے جعلی اکاونٹس کیس میں گرفتار ملزم ندیم بھٹو کا پانچ روزہ راہداری ریمانڈ پر قومی احتساب بیورو(نیب) کے حوالے کردیا ہے۔

نیب سکھر نے دو روز قبل ندیم بھٹو کو لاڑکانہ سے گرفتار کیا تھا۔

نیب کے مطابق ملزم ندیم بھٹو جعلی اکاونٹس سے لاکھوں روپے رقوم وصول کرتا رہا ہے، ندیم بھٹو وصول کردہ رقوم سے بھٹو اسٹیٹ کے ملازمین کو تنخواہیں جاری کرتا رہا ہے۔

ندیم بھٹو نوڈیروہاوس کے انچارج اور سابق صدر آصف علی زرداری کے قریبی ساتھی ہیں۔

دوسری طرف نیب راولپنڈی نےآصف زرداری کےلیگل ایڈوائزرابوبکرزرداری کو آج طلب کرلیا ہے، انہوں نے گرفتاری سے بچنے کے لیے ضمانت قبل ازوقت گرفتاری کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کردی ہے۔

یاد رہے گزشتہ روز جعلی بینک اکاونٹس کیس سے جڑے پارک لین کیس کے ملزم سلیم فیصل وعدہ معاف گواہ بن گئے تھے۔ انہوں نے نیب کو وعدہ معاف گواہ بننے کی باضابطہ درخواست دی تھی۔

یہ بھی پڑھیں جعلی بینک اکاونٹس کیس، ملزم سلیم فیصل وعدہ معاف گواہ بن گئے

ذرائع کے مطابق سلیم فیصل نے نیب کو اپنے بیان میں کہا ہے کہ تمام معاملات پارک لین کی انتظامیہ کے کہنے پر کرتا رہا۔

سلیم فیصل نے انکشاف کیا کہ انٹرنیشنل بزنس اینڈ شاپنگ سنٹر نامی پلازے پر اربوں روپے کا قرض لیا گیا اور پھرڈیفالٹ کروا کر قرضہ خورد برد کیا گیا۔

قومی احتساب بیورو کی جانب سے پارک لین کیس میں فرنٹ کمپنی کے ڈائریکٹر اقبال نوری خان کو بھی گرفتار کیا جا چکا ہے۔

سابق صدر آصف علی زرداری کے خلاف مبینہ طور پرجعلی اکاونٹس کے ذریعے منی لانڈرنگ کا مقدمہ احتساب عدالت اسلام آباد میں زیر سماعت ہے، آصف زرداری اور ان کی ہمیشرہ فریال تالپور نے 29 اپریل تک جعلی اکاونٹس کیس میں عبوری ضمانت حاصل کررکھی ہے۔

واضح رہے آٹھ اپریل کو احتساب عدالت میں جعلی اکاونٹس کیس کی سماعت کے دوران بھی دو خواتین ملزمان نے وعدہ معاف گواہ بننے کی استدعا کی تھی۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے سات جنوری 2018 کو جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کا معاملہ مزید تحقیقات کے لیے قومی احتساب بیورو کو بھجوایا تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز