جعلی اکاؤنٹس کیس، نیب نے زرداری کو 16 مئی کو طلب کر لیا

اسلام آباد: جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کی تحقیقات کے سلسلے میں قومی احتساب بیورو (نیب) راولپنڈی نے سابق صدر آصف زرداری کو 16 مئی کو طلب کر لیا۔

ذرائع کے مطابق سابق صدر کو نیب اولڈ ہیڈ کوارٹرز پیش ہونے کا نوٹس جاری کیا گیا ہے،آصف زرداری کو سندھ حکومت کی جانب سے غیر قانونی ٹھیکے دینے کے کیس میں طلب کیا گیا ہے۔

نیب کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت نے ہریش اینڈ کمپنی کو غیر قانونی ٹھیکے دیے، نیب نے متعلقہ کیس میں احتساب عدالت میں ریفرنس بھی دائر کر رکھا ہے۔

ریفرنس میں اومنی گروپ کے عبدالمجید غنی اور مناہل غنی بھی ملزم نامزد ہیں۔

اس سے قبل نیب نے آصف زرداری کو نو مئی کو طلب کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے:آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری نے نیب کو بیان ریکارڈ کرا دیا

واضح رہے جعلی اکاؤنٹس کیس میں سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے غیر قانونی ٹھیکوں میں طلبی کے معاملے پر اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق سابق صدر نے پیشی سے پہلے ضمانت کے لئے ہائی کورٹ سے رجوع کا فیصلہ کیا ہے، وہ کل ذاتی حیثیت میں پیش ہو کر درخواست دائر کریں گے۔

آصف زرداری کی جانب سے پانچویں انکوائری میں بھی ضمانت کی درخواست دائر کی جائے گی۔

ذرائع نے بتایا کہ نئی درخوستِ ضمانت کا فیصلہ نیب کے نئے نوٹس کے بعد کیا گیا۔

آصف زرداری نے اس سے پہلے پارک لین، جوائنٹ وینچر ، بلٹ پروف اور منی لانڈرنگ کیس میں ضمانت حاصل کر رکھی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آصف زرداری کو مبینہ جعلی بنک اکاؤنٹس کیس اور سندھ حکومت سے غیر قانونی ٹھیکے حاصل کرنے کے کیس میں تحقیقات کے سلسلے میں طلب کیا گیا ہے۔ سابق صدرپاکستان  کو نیب اولڈ ہیڈکواراٹر میں پیش ہونے کا نوٹس بھی جاری کر دیا گیا ہے۔

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت نے ہریش اینڈ کمپنی کو غیر قانونی ٹھیکے دیے۔ نیب نے متعلقہ کیس میں احتساب عدالت میں ریفرنس بھی دائر کر رکھا ہے جس میں اومنی گروپ کے عبدالمجید غنی اور مناہل غنی بھی ملزم نامزد ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز