پی ٹی آئی کے رہنما علیم خان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 27 مئی تک توسیع


لاہور : احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثہ جات  اور آف شور کمپنیاں بنانے کے الزامات پر گرفتار پی ٹی آئی کے رہنما علیم خان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 27 مئی تک توسیع کر دی۔

احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے کیس کی سماعت کی۔  نیب حکام نے جوڈیشل ریمانڈ ختم ہونے پر سابق صوبائی وزیر بلدیات علیم خان کو احتساب عدالت لاہور میں پیش کیا۔

دوران سماعت عدالت نے نیب کے پراسیکیوٹر سے استفسار کیا کہ ریفرنس کب فائل کیا جائے گا ؟

نیب پراسیکیوٹر وارث علی جنجوعہ نے عدالت کو آگاہ کیا کہ آف شور کمپنیوں کے حوالے سے متحدہ عرب امارات اور یوکےحکام  کو خطوط لکھے ہیں جواب آنے پر ریفرنس دائر کر دیا جائے گا۔

احتساب عدالت کے  جج نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ اگر 25 سال تک خط کا جواب نہیں آئے گا تو کیا انتظار کرتے رہیں گے؟

عدالت نے نیب کو جلد حتمی رپورٹ جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے علیم خان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 27 مئی تک توسیع کر دی۔

یہ بھی پڑھیے:علیم خان کی درخواست ضمانت، عدالت نے آفشور کمپنیوں کا ریکارڈ طلب کرلیا

علیم خان کی احتساب عدالت پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے اور جوڈیشیل کمپلیکس کے اطراف آنے والے راستوں کو کنٹینرز اور خاردار تاریں لگا کر بند کیا گیاتھا۔

یا د رہے کہ علیم خان رواں سال 6فروری سے نیب کی حراست میں ہیں۔ نیب نےاس وقت کے صوبائی وزیر بلدیات علیم خان کو آف شور کمپنیوں کے اسکینڈل میں گرفتار کر کے نیب کی حوالات میں  منتقل کیاتھا اور نیب نے علیم خان سے 5 آف شور کمپنیوں سے متعلق سوالات کیے۔

یہ بھی پڑھیے:علیم خان مزید جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

ذرائع کے مطابق علیم خان 18 میں سے صرف 3 سوالات کے ہی جواب دے سکے۔  نیب نے غیر تسلی بخش جوابات کے بعد علیم خان کو گرفتار کر لیا تھا۔

دوسری جانب سیشن عدالت نے علیم خان کے خلاف الیکشن کمیشن کا استغاثہ کیس تیس مئی تک ملتوی کردیا ہےالیکشن کمیشن کے استغاثہ میں کہا گیا ہے کہ علیم خان نے دو ہزار پندرہ کے ضمنی انتخابات کے کاغذات نامزدگی میں حقائق چھپائے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز