بولرز پھر ناکام، انگلینڈ چھ وکٹوں سے کامیاب

May 15, 2019

سنچری اسکور کرنے کے انگلش بلے باز جونی بیئرسٹو خوشی کا اطہارکررہے ہیں—رائٹرز۔

برسٹل: بیٹسمینوں کی جانب سے 358 رنز اسکور بورڈ پر لگائے جانے کے باوجود پاکستانی گیند باز اس پہاڑ جیسے مجموعے کا دفاع کرنے میں ناکام رہے اور انگلینڈ تیسرے ون ڈے میں بھی چھ وکٹوں سے کامیاب ہوگیا۔

برسٹل میں کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

پاکستان کی پہلی وکٹ فخر زمان کی صورت میں جلد گئی گئی تاہم دوسرے اوپنر امام الحق نے شاندار 151 رنز اسکور کرتے ہوئے ٹیم کے اسکور میں کلیدی کردار ادا کیا۔

یہ امام کی چھٹی سنچری تھی جو انہوں نے 27 میچز میں بنائیں۔ اس سے قبل سری لنکا کے اپل ترنگا نے 29 میچز میں 6 سنچریاں اسکور کی تھیں۔

امام الحق کے 151 پاکستان کی جانب سے انگلینڈ کے خلاف ایک روزہ کرکٹ میں سب سے زیادہ اسکور ہے۔

یہ بھی پڑھیں سنسنی خیز مقابلے کے بعد دوسرا ون ڈے انگلینڈ کے نام

اس کے علاوہ امام الحق انگلینڈ میں 150 رنز بنانے والے کم عمر ترین کھلاڑی بھی بن گئے۔ اس پہلے یہ ریکارڈ بھارت کے آل راؤنڈر کپل دیو کے پاس تھا۔

شاندار اننگز میں امام الحق ایک سو اکتیس بالوں پر ایک سو اکاون رنز بنائے جس میں 16 چوکے اور ایک چھکا شامل تھا۔ اوپنر نے 211 منٹس تک کریز پر قیام کیا۔

امام کے علاوہ آصف علی 52 جبکہ حارث سہیل 41 کے ساتھ نمایاں رہے۔ انگلینڈ کی جانب سے کرس ووکس نے چار پاکستانی بلے بازوں کو پویلین لوٹایا۔
جواب میں انگلینڈ کو اوپنرز نے شاندار 159 رنز کا برق رفتار آغاز فراہم کرتے ہوئے جیت کی بنیاد رکھ دی۔
پاکستانی فیلڈرز نے بھی انگلش ٹیم کا بھرپور ساتھ دیتے ہوئے میچ کے دوران متعدد کیچز ڈراپ کیے۔
انگلینڈ کی جانب سے جونی بیئرسٹو نے 128، جیسن روئے نے 76، جو روٹ نے 43 جبکہ معین علی نے 46 رنز بنائے۔
انگلینڈ نے 45ویں اوور میں باآسانی پاکستان کو شکست دے کر سیریز میں 0-2 کی سبقت حاصل کرلی
پاکستانی گیند باز بے بسی کی تصویر بنے رہے۔ جنید خان، فہیم اشرف اور عماد وسیم نے ایک، ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔
جونی بیئرسٹو کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ پانچ میچوں کی سیریز کا چوتھا ون ڈے 17 مئی کو کھیلا جائے گا۔
متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز