کھجور کے نو بڑے فوائد

رمضان المبارک اور کھجوروں کا تصور ایک دوسرے کے ساتھ مربوط ہے۔

احادیث مبارکہ میں سحری اور افطار میں کھجور کے استعمال کی ترغیب دی گئی ہے، کھجورکھانا، اس کو بھگوکراس کا پانی پینا، اس سے علاج تجویز کرنا سنتوں میں شامل ہیں۔ الغرض اس میں لاتعداد برکتیں اور بے شمار بیماریوں کا علاج ہے۔

حضوراکرم کا فرمان ہے :”عجوہ کھجور جنت میں سے ہے اس میں زہر سے شفا ہے۔“ (ابن النجار)

نبی کریم ﷺ کی تعلیمات کے مطابق ساری دنیا کے مسلمان افطار کے وقت کھجور سے روزہ کھولنا ثواب سمجھتے ہیں اور اب جدید تحقیق بھی یہ کہہ رہی ہے کہ کھجور جسم اور صحت کیلئے نہایت مفید ہے۔

ویسے تو اس کے بہت فائدے ہیں لیکن آج ہم آپ کو کھجور کے نو بڑے  فوائد بتا رہے ہیں۔

معدہ فعال کرتی ہے

تحقیق کے مطابق کھجور کھاتے ہی روزے کی وجہ سے سست پڑنے والا معدہ یک دم فعال ہوجاتا ہے اور غذا ہضم کرنے والے خامروں اور انزائم کی پیداوار شروع ہوجاتی ہے جو افطار کے بعد کھانے کو ہضم کرنے میں مدد دیتے ہیں۔

نظام ہاضمہ کی بہتری

نظام ہاضمہ کی بہتری کے لیے روزانہ کھجوریں کھائیں کیونکہ اس میں موجود فائبر نظام ہاضمہ کو بہتر بناتا ہے اور آنتوں کی صفائی میں مدد فراہم کرتا ہے۔

توانائی کی فراہمی کا ذریعہ

کھجور کو توانائی فراہم کرنے کا اہم  ذریعہ بھی سمجھا جاتا ہے کیونکہ یہ توانائی برقرار رکھنے میں مدد دیتی ہے۔ اس کی قدرتی مٹھاس دیگر میٹھی اشیاء کی نسبت خون کی شکر میں کم اضافہ کرتی ہے۔

بیماری سے محفوظ رکھتی ہے

کھجور کھانے والے سرطان اور ذیابیطس جیسی بیماریوں سے محفوظ رہتے ہیں۔ اس کے علاوہ کھجور میں دل اور آنکھوں کو صحت مند رکھنے کی صلاحیت بھی موجود ہے جبکہ یہ دل کی شریانیں سکڑنے کے خطرے کو کم کرتی ہے۔

 ذہن کو تیز بناتی ہے

کھجور دماغ کے لیے بھی فائدے مند ہے اور ذہن کو تیز بناتی ہے۔ دن میں صرف دو کھجوریں ذہنی نشوونما کے لیے بہترین غذا ثابت ہوسکتی ہیں۔

اچھے امتحانی نتائج کیلئے فائدہ مند

کھجور دماغ کی کارکردگی میں بہتری اور اچھے امتحانی نتائج کیلئے فائدہ مند ثابت ہوتی ہے۔

ذہنی کمزوری سے بچاؤ

کھجور بڑھتی عمر کے ساتھ پیدا ہونے والی ذہنی کمزوری کے عمل کو سست کرتی ہے۔

کولیسٹرول میں کمی

اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور کھجور کا استعمال چینی کی جگہ مفید ہے کیونکہ چینی اس خاصیت سے محروم ہے ۔اس کیلئے کھجوروں کا پیسٹ بنا کر چینی کی جگہ اتنی ہی مقدار میں استعمال کریں تو کولیسٹرول میں کافی حد تک کمی ہوسکتی ہے۔

ریشے دار غذاؤں کی کمی پوری کرے

رمضان میں کھانے کے اوقات میں تبدیلی اور ریشے دار غذائیں نہ کھانے کے باعث قبض ہوسکتا ہے تاہم کھجوروں کے حل پذیر ریشے قبض سے محفوظ رکھتے ہیں۔

حضرت عامر بن سعد بن ابی وقاص سے مروی ہےکہ ”رسول ﷺ نے فرمایا جس نے نہار منہ مدینے کی سات کھجوریں استعمال کیں۔ اس دن نہ تو اسے زہر سے نقصان ہوگا اور نہ جادو اثر کرے گا۔“

یہ وہ پھل ہے جس کا ذکر قرآن کریم میں 20 سے زائد مقامات پر کیا گیا ہے جبکہ احادیث مبارکہ میں بھی کئی جگہ کھجور کی اہمیت اور فضیلت بیان کی گئی ہے۔

کھجور پاکستان سمیت دنیا کے کئی مختلف ملکوں میں پیدا ہوتی ہے تاہم مقامات مقدسہ کی قربت کے باعث سعودی عرب میں پیدا ہونے والی کھجوروں کو عقیدت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ حجاز مقدس جانے والے اپنے ہمراہ کھجور کا تحفہ لانا نہیں بھولتے۔

سعودی عرب میں کھجور کی تقریباً سو سے زائد جبکہ دنیا میں کھجوروں کی 3000 سے زائد اقسام پائی جاتی ہیں۔ کسی زمانے میں سب سے زیادہ کھجوریں مدینہ منورہ میں ہوتی تھیں لیکن اب دیگر علاقوں میں بھی ان کی وافرمقدار میں پیدا ہوتی ہے۔

کھجوروں میں چند مقبول نام عجوہ، برہی، خلص، خضری، مجدولہ، نبوت، سیف، سقی اور سکری ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز