فرشتہ قتل کیس: وزیراعظم کے نوٹس پر ڈی ایس پی معطل

اسلام آباد: دس سالہ بچی فرشتہ کے قتل کے معاملے پر وزیر اعظم عمران خان نے براہ راست کارروائی کرتے ہوئے ڈی ایس پی عابد کو معطل کردیا جبکہ ایس پی عمر خان کو او ایس ڈی تعینات کردیا ہے۔

ذرائع کے مطابق عمران خان نے آئی جی اسلام آباد عامر ذوالفقار اور ڈی آئی جی آپریشنز وقار الدین سید سے واقعے کی وضاحت طلب کرلی ہے کہ ایف آئی آر میں نامزدگی کے باوجود پولیس اہلکاروں کو بروقت گرفتار کیوں نہیں کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: فرشتہ قتل کیس: ’ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا‘

دوسری جانب پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے ڈائریکٹر جنرل  (ڈی جی آئی ایس پی آر) میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ معصوم بچی فرشتہ کا بہیمانہ قتل قابل مذمت ہے۔


انہوں نے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ واقعے میں ٘ملوث ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لانا ہوگا، پاک فوج اس سلسلے میں ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنی نوجوان نسل کو ان بھیڑیوں سے بچانے کے لیے اٹھ کھڑا ہونا ہوگا۔

فرشتہ قتل کیس

واضح رہے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے علاقے چک شہزاد سے 15 مئی کو لاپتہ ہونے والی دس سالہ بچی فرشتہ کی مسخ شدہ نعش جنگل سے برآمد ہوئی تھی جس کے بعد ورثا اور علاقہ مکین سخت مشتعل ہوگئے تھے۔

انہوں نے معصوم بچی کی نعش تڑامٹری چوک پہ رکھ کر احتجاج شروع کر دیا تھا تاہم کارروائی کی یقین دہانی کے بعد احتجاج ختم کردیا گیا۔

قبائلی علاقے مہمند سے تعلق رکھنے والی فرشتہ مہمند کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرکے نعش قریبی جنگل میں پھینک دی گئی تھی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز