جمنا زیادتی کیس: پولیس نے درندہ صفت ملزمان کو گرفتار کرلیا

جمنا زیادتی کیس: پولیس نے درندہ صفت ملزمان کو گرفتار کرلیا

ٹنڈو محمد خان: بھیک مانگنے والی ’12 سالہ‘ کمسن ’جمنا‘ کو شراب پلا کر زیادتی کا نشانہ بنانے والے مبینہ طور پر درندہ صفت سفاک ملزمان کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق ملزمان نے شراب پلا کر دو دن تک معصوم جمنا کو اپنی ہوس کا نشانہ بنایا۔

ہم نیوز کے مطابق اس ضمن میں حکومت سندھ کو ملنے والی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جمنا مقامی شوگر ملز کے گراؤنڈ سے بے ہوشی کی حالت میں ملی تھی۔ اس کی موجودگی کی نشاندہی مقامی افراد نے کی تھی جن کا کہنا تھا کہ وہ ’شاید‘ کسی نشہ آور چیز کے زیر اثر ہے۔

سجاول کی تحصیل جاتی سے تعلق رکھنے والی جمنا گلیوں گلیوں بھیک مانگتی ہے۔ علاقہ پولیس کے مطابق مبینہ طور پر جمنا کی ’معصومیت‘ کے ’قاتل‘ دونوں ملزمان روشن شیخ اور رجب کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

ہم نیوز کے مطابق پولیس نے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے۔

مشیر اطلاعات سندھ بیرسٹر مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ حکومت سندھ  کیس کی انکوائری کررہی ہے اور متاثرہ  جمنا کو مکمل طور پر طبی و قانونی مدد فراہم کی جائےگی۔

جمنا کی وڈیو سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر بھی وائرل ہوئی ہے جس میں ممتاز صحافیوں، سماجی تنظیموں کے رہنماؤں اور حقوق انسانی کے علمبرداروں کی جانب سے مطالبہ کیا جارہا ہے کہ معصوم ’جمنا‘ کے ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جائے اور متاثرہ بچی کی مکمل داد رسی کا بندوبست کیا جائے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز