پی اے آر سی:پیپلزپارٹی دور کے 269 ملازمین کی بھرتی غیر قانونی قرار

پیپلز پارٹی دور میں پاکستان ایگری کلچر ریسرچ کونسل (پی اے آر سی) میں بھرتی کئے گئےملازمین کے لئے بری خبرسامنےآئی ہے۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے  269 ملازمین کی بھرتی کو غیرقانونی قراردے دیا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے دورکنی بنچ  میں شامل جسٹس عامرفاروق اورجسٹس محسن اخترکیانی نے محفوظ فیصلہ سنایا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے سنگل بنچ  کے جج جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے بھرتی غیر قانونی قرار دے کر درخواست خارج کی تھی۔

ملازمین نے سنگل بنچ کے فیصلے کے خلاف ڈویژن بنچ میں اپیل دائر کر رکھی تھی۔

پیپلزپارٹی دور میں خورشیدشاہ کمیٹی نے ملازمین کی بھرتی قانونی قرار دے کر بحال کیا تھا۔ ملازمین کو 2008 سے2010 کے درمیان پی اے آر سی بھرتی کیا گیا۔

23 مئی2011 کو ملازمین کو وزارت فوڈسیکورٹی نے غیرقانونی قرار دے کر فارغ کیا۔ خورشید شاہ کمیٹی نے 2012 میں ملازمین کو بحال کردیاتھا۔

یہ بھی پڑھیے: سندھ: 70 سے زائد اساتذہ کی بھرتی غیر قانونی قرار

2018 میں چئیرمین پی اے آر سی ڈاکٹر یوسف ظفر نے دوبارہ انکوائری شروع کی تو ملازمین نے انکوائری کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز