پنجاب: کابینہ نے مالی سال 2019-20کے بجٹ کی منظوری دیدی

وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدارکا راولپنڈی میں دوسری خواتین یونیورسٹی بنانے کا اعلان

لاہور :وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکی زیرصدارت اجلاس میں صوبائی کابینہ نے نئے مالی سال 2019-20کے بجٹ کی منظوری دیدی۔ صوبہ پنجاب کے نئے مالی سال 2019-20 کی بجٹ تجاویز اتفاق رائے سے منظورکرلی گئیں۔

مالیاتی بل 2019 اورسالانہ ترقیاتی پروگرام 2019-20 کی بھی منظوری دی گئی۔ضمنی بجٹ مالی سال2018-19 کی منظوری کے علاوہ مالی سال 2018-19 کے نظرثانی شدہ تخمینہ جات کی بھی منظوری  بھی دیدی گئی۔

صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ  جنوبی پنجاب کے تینوں ڈویژن کے فنڈز کسی دوسری جگہ ٹرانسفر کرنے پر پابندی کی بھی منظوری دی گئی۔کابینہ کی منظوری کے بعد جنوبی پنجاب کیلئے مختص فنڈز صرف اسی علاقے کی ترقی و خوشحالی کے پروگراموں پر خرچ ہوں گے۔

کابینہ نے وزیراعلیٰ اور صوبائی وزراء کی تنخواہوں میں 10 فیصد کمی کی بھی منظوری دی۔

سردار عثمان بزدار نے کہا کہ پوری ٹیم نے انتہائی محنت کے ساتھ بجٹ کی تیاری کا مشکل مرحلہ مکمل کیا۔ اپنی او رکابینہ کی جانب سے پوری ٹیم کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت کا بجٹ عام آدمی کی فلاح و بہبود کے لئے ہے۔ اس بجٹ میں عام لوگوں کا احساس کیا گیا ہے۔

عثمان بزدار نے کہا مشکل حالات کے باوجود وزیراعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق بجٹ میں عام آدمی کو ریلیف دینے کے لئے ا قدامات تجویز کئے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  بجٹ تحریک انصاف کے منشور کے عین مطابق بنایا گیا ہے۔ نئے بجٹ میں تمام علاقوں کی پائیدار اور متوازن ترقی کو ترجیح دی گئی ہے۔سماجی شعبے کی بہتری کیلئے بے مثال اقدامات تجویز کئے گئے ہیں۔

پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار وسائل ہیومن ڈویلپمنٹ پر خرچ کرنے کیلئے پائیدار اقدامات کئے گئے ہیں۔جنوبی پنجاب اور پسماندہ علاقوں کو ماضی میں بری طرح نظرانداز کیا گیا۔حکومت نے جنوبی پنجاب اور دور دراز علاقوں کی ترقی و خوشحالی کیلئے ٹھوس اقدامات کئے ہیں۔

سردار عثمان خان بزدار نے کہا  بجٹ میں حقیقت پسندانہ اہداف مقرر کئے ہیں۔ صوبے کے عوام کی بنیادی ضروریات کو مدنظر رکھ کر ترجیحات کا تعین کیا گیا ہے۔یہ بجٹ اعدادوشمار کی جادوگری نہیں بلکہ صوبے کے عوام کی پائیدار اور متوازن ترقی پر مبنی حقیقی دستاویزہے۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب کے عوام کی پائیدار ترقی و خوشحالی کی ٹھوس بنیاد رکھی گئی ہے۔ اپوزیشن کا کام صرف شور مچانا رہ گیا ہے۔حکومت عوام کی فلاح و بہبود کے سفر کو آگے بڑھاتی جائے گی۔بجٹ اجلاس کے دوران اراکین اسمبلی سے مسلسل رابطہ رہے گا۔ڈویژن کے اراکین اسمبلی سے میٹنگز کا سلسلہ جاری رہے گا۔

سیکرٹری خزانہ نے  صوبائی بجٹ اور سالانہ ترقیاتی پروگرام کے اہم خد و خال کے حوالے سے کابینہ کو بریفنگ دی ۔ کابینہ اراکین نے صوبائی بجٹ کے حوالے سے اپنی آراء بھی پیش کیں۔اجلاس میں صوبائی وزراء، مشیران، معاونین خصوصی، چیف سیکرٹری اور متعلقہ محکموں کے سیکرٹریزنے شرکت کی ۔

یہ بھی پڑھیے:پنجاب:21 کھرب روپے کا بجٹ آج پیش کیا جائیگا

وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار نے  بجٹ مرتب کرنے پر صوبائی وزیر خزانہ ہاشم جواں بخت، مشیرخزانہ پنجاب ڈاکٹر سلمان شاہ، چیف سیکرٹری، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری خزانہ اور متعلقہ محکموں کے افسران کی کارکردگی کو خراج تحسین کیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز