جب چاہیں حکومت گرا سکتے ہیں، بلاول بھٹو

ایمنسٹی اسکیم چور اور ڈاکوؤں کے لیے لائی گئی، بلاول بھٹو

فوٹو: فائل

اسلام آباد: چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے سیاسی انتقام کا سلسلہ جاری ہے، میرے والد اور پھپو کو جیل میں ڈال دیا گیا مجھے فرق نہیں پڑتا، ہم اب پیچھے ہٹنے والے نہیں ہیں۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ملک پر چادر اور چار دیواری کا خیال نہ رکھنے والے بزدل حکمران مسلط ہیں، یاد رکھیں آپ کے گھر میں بھی ماں، بہن بیٹی ہیں، آپ نے ہمیشہ حکومت میں نہیں رہنا۔

ان کا کہنا تھا کہ نئے پاکستان اور مشرف کے پاکستان میں کوئی فرق نہیں ہے، پیپلز پارٹی نے آمروں کا مقابلہ کیا ہے اس کٹھ پتلی حکومت کی کیا حیثیت ہے۔

بلاول نے کہا کہ ہم چاہیں تو آسانی سے پی ٹی آئی حکومت گرا سکتے ہیں تاہم ہم ایسا نہیں چاہتے۔

انہوں نے کہا کہ مشرف کی طرح آج کٹھ پتلی وزیراعظم نے بھی عدلیہ پر حملہ کیا ہے،  اسکرپٹ سے ہٹ کر چلنے والے ججز کے خلاف کارروائی ہو رہی ہے، ہر ادارے کو دباؤ اور دھمکیوں سے چلانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے سیاسی گرفتاریاں محض عوام کی توجہ موجودہ معاشی صورتحال سے ہٹانے کے لئے کی گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عوام کی توجہ معاشی صورتحال سے ہٹانے کے لئے حکومت نے صدر زرداری اور فریال تالپور کو بجٹ پیشی کے روز گرفتار کرایا  ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت آئی ایم ایف کے بجٹ کو دھاندلی کے ذریعے منظور کرانے کی کوشش کرے گی اگر ایسا ہوا تو اس بجٹ کی کوئی حیثیت نہیں ہو گی۔

 

 

 

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز