خیبر پختونخوا: نسوار پر ٹیکس لگائے جانے پر ممبر صوبائی اسمبلی کی پریشانی

پشاور:خیبرپختونخوا میں جہاں  عام عوام بجٹ میں ٹیکسوں میں اضافے کے باعث پریشان ہیں وہیں ایک رکن صوبائی اسمبلی کو نسوار پر ٹیکس لگائے جانے کی وجہ سے پریشانی کاسامنا ہے۔

مانسہرہ سے تعلق رکھنے والے ن لیگی رکن صوبائی اسمبلی سردار اورنگزیب نلوٹھہ نے نسوار پر لگائے گئے ٹیکس میں  کمی کے لیے ایوان میں آواز اٹھائی ہے۔

خیبر پختونخوا اسمبلی میں ضلع مانسہرہ سے تعلق رکھنے والے سردار اورنگزیب نلوٹھہ نے ایوان میں سوال اٹھایا کہ آٹا ،گھی اور دالیں  تو مہنگی ہونا ہی تھیں، نسوار پر ٹیکس کیوں لگایا؟

سردار اورنگزیب نلوٹھہ نے آواز بلند کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے اور چیزوں پر تو ٹیکس لگایا ،نسوار پرٹیکس کیوں لگایاگیا جواب دیا جائے؟

ن لیگی رکن صوبائی اسمبلی سردار اورنگزیب نلوٹھہ کی طرف سے آواز اٹھائے جانے پر ایوان میں قہقے بلند ہوئے تو اجلاس کی صدارت کرنے والے ڈپٹی اسپیکر محمود جان نے فوری طور پر نسوار کو منشیات کی فہرست میں ڈال کر کارروائی سے لفظ نسوار کو حذف کرنے کی رولنگ دیدی۔

یہ بھی پڑھیے:خیبر پختونخوا کے نئے بجٹ میں تعلیم کیلئے کیا ہے؟

گزشتہ روز ہوئی بجٹ بحث کے دوران نسوار کے تذکرے نے ایوان کے  خشک ماحول کو خوشگوار بنادیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز