صدر ٹرمپ کی آبنائے ہرمز کی حفاظت سے دستبردار ہونے کی دھمکی

’ٹرمپ کے نسل پرست بیانات پر دنیا کی خاموشی تشویشناک ہے‘

امریکی صدر ٹرمپ نے کہا ہے کہ ان کا ملک آبنائے ہرمز کی حفاظت سے پیچھے ہٹ سکتا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں انہوں نے کہا کہ چین 91 فیصد، جاپان 62 فیصد اور دیگر کئی ممالک اپنے تیل کے لیے آبنائے ہرمز استعمال کرتے ہیں۔


انہوں نے سوال اٹھایا کہ امریکہ بغیر کسی معاوضے کے دوسرے ممالک کے تجارتی راستوں کی حفاظت کس لیے کر رہا ہے؟

صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ان تمام ممالک کو اس پرخطر سفر پر جانے والے اپنے بحری جہازوں کی حفاظت کا انتظام خود کرنا چاہیئے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اس جگہ نہیں ہونا چاہیئے کیونکہ امریکہ پوری دنیا میں توانائی پیدا کرنے والا سب سے بڑا ملک بن چکا ہے۔

امریکی صدر نے کہا کہ ایران کے لیے امریکی درخواست بالکل سادہ سی ہے اور وہ یہ کہ ایران ایٹمی ہتھیار اور دہشت گردی سے باز رہے۔

صدر ٹرمپ نے مزید کہا ہے کہ وہ ایران پر پابندیاں عائد کرنے کے لیے ایگزیکٹیوآرڈر پر دستخط کر رہے ہیں، یہ ڈرون طیارہ گرانے کا جواب ہیں، ان پابندیوں کا ہدف ایرانی سپریم لیڈرہوں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کو جوہری ہتھیار حاصل نہیں کرنے دیں گے، ہم اس سلسلے میں معاہدے کے لیے تیار ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز