اقتصادی رابطہ کمیٹی نے گیس مہنگی کرنے کی منظوری دیدی

اسلام آباد:اقتصادی رابطہ کمیٹی نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی سمری منظور کرلی ہے۔  مشیر خزانہ حفیظ شیخ کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی  نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری دی۔

ای سی سی نے گھریلو اور کمرشل گیس صارفین کےلئے ایک سو نوے فیصد تک گیس مہنگی کرنے کے منظوری دی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی کابینہ تیس جون سے قبل اپنے اجلاس میں ای سی سی کے فیصلے کی توثیق کریگی۔ وفاقی کابینہ کی توثیق کے بعد وزارت پیٹرولیم گیس کی قیمتوں میں اضافہ کا نوڑیفیکسن جاری  کریگی ۔

گیس کی قیمتوں  میں اضافے  کا اطلاق یکم جولائی سے ہوگا۔

ای سی سی میں پیش کی گئی سمری میں ماہانہ 285 روپے بل ادا کرنے والے صارفین کے بل میں 137 روپے اضافے اور پانچ سو بہتر روپے ماہانہ گیس کا بِل ادا کرنے والے صارفین کے بل میں 637 روپے اضافے کی تجویز دی گئی ۔

ایسے صارفین جن کا ماہانہ بل 2305 روپے آتا ہے اب ان کا بل 4900 روپے ہو جائے گا۔ جب کہ 3579 روپے ماہانہ بل ادا کرنے والے صارفین کو اب 4406 روپے اضافے کے ساتھ 7995 روپے ماہانہ گیس کا بل ادا کرنا پڑے گا ۔

13508 روپے ماہانہ والے صارفین کے لیے 865 روپے اضافہ جب کہ 31573 روہے ادا کرنے والے صارفین کا گیس بل اب 6039 روپے کمی کے ساتھ 25 ہزار 5 سو 34 روہے ہوجائے گا ۔

گیس کی قیمتوں میں اضافے سے صارفین پر 175 ارب روپے کا بوجھ پڑ سکتا ہے ۔

اوگرا نے چند روز قبل گھریلو صارفین کے لیے گیس کے نرخوں میں دو سو چار فیصد تک اضافے کا فیصلہ وفاقی حکومت کو بھجوایا تھا ۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی کی موجودہ حکومت گیس کی قیمتیں 145 فیصد پہلے ہی بڑھا چکی ہے۔

یہ بھی پڑھیے:گیس 200 فیصد مہنگی کرنے کا فیصلہ

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز