ماڈل نازش جہانگیر نے محسن عباس کی اہلیہ کے الزامات مسترد کردیے

ماڈل نازش جہانگیر نے اداکار اور گلوکار محسن عباس کی اہلیہ فاطمہ سہیل کی جانب سے لگائے گئے الزامات کو مسترد کردیا ہے۔

سوشل میڈیا پر جاری ہونے والے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ فاطمہ نے ان پر بغیر کسی ثبوت کے الزام عائد کیا ہے۔

نازش جہانگیر کا کہنا تھا کہ اگر فاطمہ کے پاس اس حوالے سے کوئی ثبوت ہوتا تو وہ اسے بھی سوشل میڈیا پر پوسٹ کرتیں جس طرح انہوں نے اپنے شوہر کے تشدد کے شواہد پوسٹ کیے تھے۔

مزید پڑھیں: اداکار محسن عباس اور فاطمہ سہیل کو پولیس نے طلب کرلیا

ان کا کہنا تھا کہ محسن عباس اور فاطمہ سہیل کے درمیان اختلافات کی وجہ وہ نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فاطمہ ان سے فون پر بات کی کرتی تھیں اور اپنی نجی باتیں بھی ان سے شیئر کی کرتی تھیں، یہاں تک کہ جب وہ حمل سے تھیں تب بھی ان سے باتیں کرتی تھیں۔

ماڈل نے سوشل میڈیا پر کہا کہ اگر ان کے اور محسن عباس کے درمیان تعلقات ہوتے تو کیا فاطمہ ان سے رابطے میں رہتیں؟

انہوں نے کہا کہ محسن عباس اور وہ اچھے دوست ہیں جبکہ فاطمہ بھی ان کی اچھی دوست ہوا کرتی تھیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ فاطمہ نے ان کے خلاف بے بنیاد الزامات عائد کیے ہیں اور وہ ایسا کچھ کرنے کے بارے میں تصور بھی نہیں کرسکتیں۔

محسن عباس کی اہلیہ فاطمہ سہیل نے اس سے قبل اپنے خاوند پر تشدد کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ ظلم برداشت کرنا بھی گناہ ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر انہوں نے لکھا تھا کہ گزشتہ سال نومبر سے ان کے خاوند کسی اور لڑکی میں دلچسپی لینے لگے تھے اور معلوم ہونے پراس وقت انہیں تشدد کا نشانہ بنایا جب وہ حاملہ تھیں۔

فاطمہ سہیل نے دعویٰ کیا کہ حالت خراب ہونے پر انہوں نے اپنی ایک دوست کو فون کیا جس نے انہیں اسپتال پہنچایا لیکن ڈاکٹرز نے علاج سے یہ کہہ کر معذرت کر لی کہ یہ پولیس کیس ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز