قومی اسمبلی کا اجلاس9 اگست تک جاری رکھنے کا فیصلہ

اپوزیشن کا ڈیم فنڈ کی تفصیلات قومی اسملبی میں پیش کرنے کا مطالبہ

اسلام آباد: قومی اسمبلی کا رواں  اجلاس نو اگست تک جاری رکھنے کا فیصلہ ہواہے ،یہ فیصلہ اسپیکرقومی اسمبلی  اسد قیصر کی زیر صدارت ہاؤس بزنس مشاورتی کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔ 

ذرائع کا کہناہے کہ دولت مشترکہ کانفرنس کی بدولت کل اور بدھ کو قومی اسمبلی اجلاس نہیں ہوگا۔ اپوزیشن نے اجلاس میں زیر حراست اراکین کے پروڈکشن آرڈر کا معاملہ اٹھایا تاہم  اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ ن لیگ نے درخواست ہی نہیں دی پیپلزپارٹی کی درخواست پر غور جاری ہے۔

بزنس ایڈوائزری کمیٹی کے اجلاس کے ایجنڈے اور شیڈول کی منظوری بھی دے دی گئی ہے۔

آج پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد میں اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے قائد حزب اختلاف شہباز شریف کی ملاقات بھی ہوئی ہے ، ایوان کا ماحول بہتر بنانے ،گرفتار ارکان کے پروڈکشن آرڈرز سے متعلق امور پر بات چیت کی گئی ۔

اپوزیشن لیڈر نے شاہد خاقان عباسی، رانا ثناءاللہ اور خواجہ سعد رفیق کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ شہباز شریف نے کہا کہ پروڈکشن آرڈرز کا اجراء اسیر اراکین اسمبلی کا حق ہے۔

قائد حزب اختلاف قومی اسمبلی شہباز شریف نے کہا کہ ایوان کا ماحول خوشگوار رکھنے کے لئے ضروری ہے کہ گرفتار اراکین کے پروڈکشن آرڈر جاری کئے جائیں ۔

اسپیکر اسد قصر نےوزیر اعلی پنجاب سے  کہا کہ پروڈکشن آرڈر کے لیے اپناا ختیار استعمال کر ینگے۔ جن اراکین کا معاملہ انکےسامنے ہے اس پر قانون کے مطابق فیصلہ ہوگا۔

یہ بھی پڑھیے: تاریخ میں سب سے زیادہ اسیران کی حامل موجودہ قومی اسمبلی

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز