جج ارشد ملک کی وڈیو کا معاملہ سپریم کورٹ میں 20اگست کو سماعت کے لئے مقرر

ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو عدلیہ پر دباؤ قرار

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک  کی مبینہ ویڈیو کامعاملہ سماعت کے لیے مقرر کردیا ہے۔ چیف جسٹس پاکستان آصف سعید خان کھوسہ کی سربراہی میں تین رکنی بنچ 20 اگست کو سماعت کرے گا۔ 

جسٹس عظمت سعید اور جسٹس عمر عطا بندیال تین رکنی بنچ میں شامل ہیں۔ سپریم کورٹ نے فریقین کو نوٹسز جاری کر دیے ہیں۔

عدالت نے ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو سے متعلق ایف آئی اے سے رپورٹ طلب کر رکھی ہے۔

جج ارشد ملک کی مبینہ وڈیو کے معاملے پراشتیاق مرزا ایڈووکیٹ  نامی شہری کی طرف سے 12 جولائی کو دائر کی گئی تھی۔ اس کے بعد بھی مزید دو درخواستیں دائر کی گئی تھی جن کی پہلی سماعت 16جولائی کو ہوئی تھی۔

درخواست میں وفاقی حکومت ،شہباز شریف ، مریم صفدر ،شاہد خاقان عباسی اور راجہ ظفر الحق کو فریق بنایا گیا ہے۔ درخواست میں ویڈیو کے مرکزی کردار ناصر بٹ اور پیمرا کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ لیک شدہ ویڈیو کی انکوائری کا حکم دیا جائے اورعدلیہ کے وقار کو برقرار رکھنے کیلئے ملوث افراد کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔

درخواست گزارنے  موقف اختیار کیاہے کہ انکوائری سے عدلیہ کے وقار،عزت اور آزادی پر اٹھائے گئے سوالات کا جواب مل جائے گا۔ ایسا لگتا ہے ویڈیو لیک ہونے سے عدلیہ کی آزادی پر سوال اٹھایا گیا ہےاس لیے عدالت ہر صورت اس معاملے کی انکوائری کرائے۔

درخواست میں کہا گیاہے کہ 6 جولائی کو مریم صفدر اور دیگر نے پریس کانفرنس کی جس میں جج ارشد ملک اور ناصر بٹ کے درمیان بات چیت کی ویڈیو پیش کی گئی۔ اس ویڈیو سے یہ تاثر ملتا ہے کہ عدلیہ آزادی سے کام نہیں کرتی اور بلیک میل ہوتی ہے۔6 جولائی کی پریس کانفرنس کا ریکارڈ پیمرا سے طلب کیا جائے۔

درخواست گزار کا کہنا ہے کہ پریس کانفرنس میں جوالزامات عدلیہ پر لگائے گئے ان کی انکوائری ہونا ضروری ہے،جج ارشد ملک اپنی پریس ریلیز میں مریم نواز کے لگائے گئے الزمات ماننے سے انکار کرچکے ہیں۔ جج ارشد ملک نے جو پریس ریلیز میں رشوت کی آفر کرنے کی بات کی ہے وہ سنجیدہ نوعیت کی ہے۔

عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ  مریم نواز نے جو الزمات  اپنی پریس کانفرنس کے دوران لگائے ہیں وہ توہین عدالت کے زمرے میں آتے ہیں۔ وفاقی حکومت کو ہدایت کی جائے کہ عدلیہ کی آزادی کے لئے اقدامات کرے۔

یہ بھی پڑھیے: ’عدالت نے طلب کیا تو جج ارشد ملک کی ملاقاتوں کی اصل ویڈیوز پیش کر دیں گے‘

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز