وزیر خارجہ نے روسی ہم منصب کو کشمیر کی صورتحال سے آگاہ کیا

‘ کشمیریوں کے قاتلوں کے ساتھ نہیں بیٹھ سکتا’

فوٹو: فائل

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے روسی ہم منصب سے رابطہ کر کے انہیں مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورتحال سے آگاہ کیا۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے روسی ہم منصب سرگئی لاروف سے ٹیلیفونک رابطہ کیا اور بتایا کہ بھارت، غیر آئینی اقدامات کے ذریعے مقبوضہ جموں و کشمیر کے آبادیاتی تناسث کو تبدیل کرنے کے درپے ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کے یہ یکطرفہ اقدامات نہ صرف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے خلاف ہیں بلکہ بین الاقوامی قوانین کے بھی صریحاً منافی ہیں۔ ہندوستان کے حالیہ غیر آئینی اقدامات خطے میں امن و امان کے لیے شدید خطرات کا باعث ہو سکتے ہیں۔

وزیر خارجہ نے اپنے روسی ہم منصب کو مقبوضہ جموں و کشمیر میں مسلسل کرفیو کی وجہ سے کشمیری عوام کو درپیش مشکلات اور تکالیف سے بھی آگاہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی سیکیورٹی فورسز کی جانب سے مقبوضہ جموں و کشمیر میں بڑھتی ہوئی جارحیت اور جبر، خطے کے امن و امان کو مزید خرابی کی طرف لے جا سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں ملک میں 73واں یوم آزادی کشمیریوں کے نام

شاہ محمود قریشی نے روسی وزیر خارجہ کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے صدر کو لکھے گئے اپنے حالیہ خط کے بارے میں بھی بتایا جس میں مقبوضہ جموں و کشمیر کی تشویشناک صورتحال اور بھارت کے غیر آئینی اقدامات کے پیش نظر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے کہا کہ روس اس ساری صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے، روسی وزیر خارجہ نے ہندوستان کے ساتھ تمام تصفیہ طلب امور کو پر امن طریقے سے مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔

دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ نے خطے میں امن و استحکام کے لیے باہمی روابط جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز