وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان رابطہ


اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے، وزیراعظم نے صدر ٹرمپ کومقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے تفصیلی آگاہ کیا اور مودی سے بات کرنے کا کہا ۔

انہوں نے کہا آج امریکی صدر کی بھارتی وزیراعظم سے بھی گفتگو ہوئی جسمیں امریکی صدر نے خطے میں کشیدگی پر تشویش سے آگاہ کیااور کشیدگی کم کرنے کیلئے کہا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے علاقائی امن کو ہر صورت مقدم رکھنے کی بات کی۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ٹیلی فونک رابطے میں وزیراعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو ہٹوانے کی بات بھی کی ۔

وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی 16 اگست کو بھی ڈونلڈ ٹرمپ سے بات ہوئی تھی اور انہیں بتایا کہ یہ بھارت کا یکطرفہ فیصلہ ہے۔ وزیر اعظم نے پاکستان کے مؤقف سے امریکی صدر کو تفصیلی سے آگاہ کیا۔

وزیر اعظم نے ڈونلڈ ٹرمپ کو مودی سرکار کے اقدامات کی وجہ سے پیدا ہونے والی صورت حال سے آگاہ کیا اور بتایا کہ 5 اگست کی صورتحال سے خطے میں سنگین صورتحال پیدا ہوئی ہے جس کو پاکستان کم کرنا چاہتا ہے۔ مودی کے اقدام کے پیچھے اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں مکمل بلیک آؤٹ ہے اور دنیا کی نظروں سے مقبوضہ جموں و کشمیر کے حقائق اوجھل ہیں جبکہ مودی سرکار کے اقدام کے پیچھے متنازعہ علاقے کی حیثیت کو تبدیل کرنا تھا۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے بھارتی اقدامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی اقدامات اقوام متحدہ کی قراردادوں اور عالمی قوانین کے خلاف ہیں، امریکی صدر نے علاقائی امن کو ہر صورت مقدم  رکھنے کی بات کی۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ ہمیں امید ہے امریکی صدر کشمیر کے تنازعہ کو حل کرنے میں اپنا کردار ادا کریں گے، وزیر اعظم نے کشمیریوں کے جذبات کی نمائندگی کی اور کشمیریوں کا مقدمہ امریکی صدر کو پیش کیا۔

یہ بھی پڑھیے: کشمیر میں شہریوں نے کرفیو توڑنے کی کوشش کی، وزیر خارجہ

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز