قومی احتساب بیوروکے ایگزیکٹو بورڈ نے دس نئی انکوائریز کی منظوری دے دی

بدعنوانی ملکی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے، چیئرمین نیب

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو(نیب)کےایگزیکٹو بورڈ نےچیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی زیر صدارت اجلاس میں  دس نئی انکوائریز کی منظوری دے دی ہے۔ 

نیب کی طرف سے جاری اعلامیہ میں کہا گیاہے کہ نیب ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں 2 انوسٹی گیشنز کی بھی منظوری دی گئی۔ سوات یونیورسٹی کے افسران و اہلکاروں کیخلاف کیسز چیف سیکرٹری پختونخوا کو بھجوانے کا فیصلہ  کیا گیاہے۔

اسی طرح محکمہ ریونیوچارسدہ کے افسران واہلکاروں ، ڈی ای او کوہاٹ اور ڈائریکٹوریٹ آف سول ڈیفنس کے اہلکاروں کیخلاف کیسز بھی چیف سیکرٹری کو بھجوانے کا فیصلہ کیا گیاہے۔

اجلاس سے خطاب میں چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا کہ نیب احتساب سب کے لئے کی پالیسی پر سختی سے عمل پیرا ہے،وائٹ کالر مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔

انہوں نےکہا کہ نیب کا ایمان  کرپشن فری پاکستان ہے،غیرقانونی ہاؤسنگ سوسائٹیز سے اربوں روپے متاثرین کو واپس کروائے ۔ کاروباری برادری کیلئے ہیڈکوارٹرز اور علاقائی دفاتر میں خصوصی سیل قائم کیے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے:  نیب نے اپنے قیام سے اب تک 326 ارب روپے ریکور کئے، چیئرمین نیب

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز