شیریں مزاری کا پریانکا کیخلاف یونیسف کو خط

شیریں مزاری کا پریانکا کیخلاف یونیسف کو خط

فائل فوٹو

اسلام آباد: پاکستان کی وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے اقوام متحدہ کے زیلی ادارے یونیسف سے مطالبہ کیا ہے کہ پریانکا چوپڑا کو بطور خیرسگالی سفیر برطرف کیا جائے۔

انسانی حقوق کی وزیر نے یونیسف کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہینریٹا فور کے نام خط میں لکھا ہے کہ امن کی سفیر بھارتی اداکارہ پریانکا چوپڑا  نے بھارتی سرکار کے ظلم اور ہتھکنڈوں کی کھل کر حمایت کی۔

خط میں لکھا گیا کہ بھارتی اداکارہ کا بطور امن کے سفیر رویہ خود امن کے خلاف ہے کیونکہ پریانکا نے پاکستان پر جوہری حملے کی دھمکی کی کھل کر تائید کی۔

یہ بھی جانیں: بے حس، انسانیت سے عاری پریانکا چوپڑا پر تنقید جاری

شیریں مزاری نے لکھا کہ پریانکا کی عالمی قوانین سے روگردانی اقوام متحدہ کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہے لہٰذا امن کی نام نہاد سفیر کی جانب سے جوہری جنگ کی تائید اقوام متحدہ کے منصب کے خلاف ہے۔

 

انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ جنگی جنون میں مبتلا اس خاتون (پریانکا) کو امن کی سفیر کے منصب سے فوری ہٹایا جائے۔

کشمیر کی صورتحال کے بارے میں انسانی حقوق کی وزیر نے لکھا ہے کہ مودی کے نسل کشی کے منصوبے نے مقبوضہ کشمیر میں بحرانی کیفیت کو جنم دیا ہے۔

خط کے متن میں درج ہے کہ بھارتی حکومت نازی عقوبت خانوں کی طرح مسلمانوں کو حراستی مراکز میں قید کررہی ہے جب کہ قابض بھارتی افواج مقبوضہ کشمیر میں خواتین اور بچوں کیخلاف پیلٹ گن بھی استعمال کر رہی ہیں۔

انہوں نے مزید لکھا کہ اس سب کے علاوہ مقبوضہ کشمیرمیں خواتین کی بے حرمتی کا سلسلہ بھی شدید ہوچکا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز