’اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا‘

’سوشل میڈیا ٹرولز اور فضل الرحمان کو سنجیدہ نہ لیا جائے‘

’حلوہ مارچ کی ناکامی پاکستان کی کامیابی ہے’

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہ کہ اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

اپنے ٹوئٹر پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی میں کوئی فرق نہیں۔

انہوں نے کہا کہ نیتن یاہو اور نریندر مودی ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ سوشل میڈیا ٹرولز اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کو سنجیدہ نہ لیا جائے۔

اس سے قبل لاہور میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ کشمیر کے معاملے پر سب سے پہلے  چین نے پاکستان کا ساتھ  دیا ہے، دونوں ممالک کا رشتہ ہمالیہ سے اونچا اور بحیرہ عرب سے گہرا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سی پیک پاکستان اور چین کے مابین اہم ترین اور بڑا منصوبہ ہے جبکہ دونوں ممالک کی باہمی تجارت کا حجم 20 بلین ڈالر تک پہنچ چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے نظریے کے مطابق پاکستان میں اکنامک زون بنائے جائیں گے اور اس سلسلے میں ہم ایشیا کا سب سے بڑا بائیو ٹیکنالوجی پلانٹ جہلم میں لگانے جا رہے ہیں جس میں چینی کمپنیوں کی سرمایہ کاری چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم چین کی مدد سے الیکٹرانک موٹرسائیکلز بنانےکیلئے پر عزم ہیں، ملک میں صنعت لگے گی تو ملازمتیں پیدا ہوں گی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز