مریم نواز سے کی جانے والی تفتیش کی رپورٹ سامنے آگئی

چوہدری شوگر ملز کیس، مریم نواز آج نیب کے سامنے پیش ہوں گی

فوٹو: ہم نیوز

لاہور:قومی احتساب بیورو(نیب)لاہور کی جانب سے سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز اور یوسف عباس سے کی جانے والی  تفتیش کی  رپورٹ  ہم نیوز نے حاصل کر لی ہے۔ رپورٹ میں انکشاف کیا گیاہے کہ مریم نواز نے اپنے اثاثوں متعلق مؤقف تبدیل کیا۔

ذرائع سے حاصل ہونے والی نیب رپورٹ میں بتایا گیاہے کہ مریم نواز سے 3 غیر ملکی کمپنیوں کی جانب سے بھجوائے گئے شئیرز کی متعلق پوچھا گیا اور ٹرانسفر ڈیڈ مانگی گئی۔

اس پر مریم نواز  نے کہا انکے پاس ٹرانسفر ڈیڈ نہیں ہے ، مریم نواز نے موقف بدلتے ہوئے کہا شاید یہ ٹرانسفر ڈیڈ پرانے ریکارڈ میں موجود ہو۔

نیب رپورٹ میں بتایا گیاہے کہ چودھری شوگر ملز کا بنک اکاؤنٹ منی لانڈرنگ کے لیے استعمال ہوتا رہا ہے ۔عبدالعزیز عباس کے اکاوؤنٹ میں 3 دنوں کے دوران 10 کروڑ کی خطیر رقم ٹرانسفر کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق 25 اکتوبر 2013 کو 2 ٹرانزیکشنز کے ذریعے 5 کروڑ کی رقم منتقل کی گئی،23 اکتوبر 2013 کو ایک ہی دن میں 5 ٹرانزیکشنز کے ذریعے 5 کروڑ کی رقوم منتقل ہوئیں۔

مریم نواز اس رقم سے متعلق تسلی بخش جواب نہیں دے سکیں،مریم نواز نے کہا کہ انکی فیملی کے دبئی میں موجود بزنس مینوں سے کاروباری مراسم ہیں،ان کاروباری شخصیات سے بزنس کے سلسلہ میں لین دین چلتا رہتا تھا۔

رپورٹ کے مطابق یوسف عباس کے اکاؤنٹ میں 1 سال کے دوران 33 کروڑ کی رقم منتقل ہوئی،یوسف عباس کو یہ خطیر رقم 2010،11 میں 10 ٹرانزیکشنز کے ذریعے منتقل ہوئیں۔

یوسف عباس نے دوران تفتیش لاعملی کا اظہارکیا اور کہا کہ وہ اس سلسلے میں  کمپنی سیکرٹری سے مشاورت کے بعد جواب دینگے۔

قومی احتساب بیورو نے اسی رپورٹ کی بنیاد پر آج لاہور کی احتساب عدالت سے مریم نواز اور یوسف عباس کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جو عدالت نے منظور کرلی۔

عدالت نے دونوں ملزمان کو  18 ستمبر کو دوبارہ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

یہ بھی پڑھیے: ’مریم نواز کو 6 سالوں میں 79 کروڑ سے زائد کے تحائف ملے‘

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز