نوبل انعام یافتہ خواتین کی مودی کو ایوارڈ نہ دینے کی درخواست

نریندر مودی کی قیادت میں بھارت ایک خطرناک اورپرتشدد ملک بن چکا ہے

واشنگٹن: نوبل انعام یافتہ معروف خواتین نے بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن سے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو ایوارڈ نہ دینے کی درخواست کی ہے۔

میریڈمیگوائر، توکل عبدالسلام کرمان اور شیرین عبادی کی جانب سے گیٹس فاونڈیشن کو لکھے گئے خط میں یہ درخواست کی گئی ہے۔

اپنے خط میں انہوں نے لکھا ہے کہ بھارت میں انسانی حقوق اورجمہوریت کومستقل خطرہ لاحق ہے کیونکہ وہاں مسلمانوں اورعیسائیوں سمیت دیگر اقلیتوں پر حملے کیے جا رہے ہیں۔

خط کے مطابق نریندر مودی کی قیادت میں بھارت ایک خطرناک اور پرتشدد ملک بن چکا ہے لہذا گیٹس فاؤنڈیشن کی جانب سے ان کو ایوارڈ دیے جانے کا اعلان تشویشناک ہے۔ ہجوم کے بڑھتے حملوں پربھارتی سپریم کورٹ بھی تشویش کا اظہار کر چکی ہے۔

واضح رہے کہ بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کی جانب سے ہندوستان کے متنازعہ وزیر اعظم کو رواں ماہ کے آخر میں ایوارڈ سے نوازے جانے کا اعلان کیا گیا تھا۔ یہ ایوارڈ انہیں اپنے ملک میں صفائی ستھرائی کا نظام کو بہتر بنانے کی کاوشوں کے اعتراف میں دیا جا رہا ہے۔

اعلان کے بعد بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کو وکلا، انسانی حقوق کے کارکنان اور مخیر حضرات کی جانب سے کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ 

اس کے علاوہ تقریبا ایک لاکھ دستخطوں کے ساتھ دائرکردہ درخواست میں انسانی حقوق کے برے ریکارڈ پر خدشات کا حوالہ دیتے ہوئے اس فیصلے کو واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز