’ابھی بھی لوگ نکالے جا رہے ہیں، آگے بھی ایسا ہی ہوتا رہے گا‘

بدلاؤ لانا خاصا مشکل کام ہے، شبلی فراز

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ ایسا کھلاڑی جو کارکردگی نہیں دکھا سکتا اسے ٹیم سے جانا ہو گا، جو کام کرے گا صرف وہی اس کا حصہ رہے کا، ابھی بھی لوگ نکالے جا رہے ہیں اور آگے بھی ایسا ہی ہوتا رہے گا۔

ہم نیوز کے مارننگ شو ’صبح سے آگے‘ میں میزبان اویس منگل والا اور شفاء یوسفزئی سے بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ پنجاب حکومت سے دو لوگ جا چکے ہیں۔ کچھ چیزیں سامنے نظر آتی ہیں جب کہ کچھ پسے پردہ ہوتی ہیں، شہباز گل اپنا کام اچھے طریقے سے کر رہے تھے لیکن چیف ایگزیکٹو کا حق ہوتا ہے کہ وہ اپنی مرضی کی ٹیم لا سکے۔

انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے مسلسل رابطے میں ہیں اور ان کی رہنمائی بھی کرتے رہتے ہیں۔ کوئی حکومت یہ نہیں چاہے گی کہ اتنی اہم کرسی پر کسی ایسے شخص کو بٹھایا جائے جو اپنے فرائض ٹھیک طرح نہ سنبھال سکتا ہو۔

رہنما پاکستان تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ ہمارا ملک 70 سالوں سے ایک خاص سمت میں چل رہا تھا، اب ایک دم سے بدلاؤ لانا خاصا مشکل کام ہے۔ ملک میں مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے لیکن اس وقت اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے۔

’غلطی تسلیم کرتا ہوں‘

ان کا کہنا تھا کہ میں یہ غلطی تسلیم کرتا ہوں کہ تحریک انصاف اپنے کیے ہوئے اچھے کام عوام تک ٹھیک طریقے سے نہیں پہنچا پا رہی، اس کی ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ ہم اب حکومت میں ہیں۔ حزب اختلاف میں رہتے ہوئے یہ تمام چیزیں اچھے طریقے سے کی جاسکتی ہیں لیکن حکومت میں آنے کے بعد اور بہت سے مسائل کو بھی دیکھنا ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کے عوام نے ہم پر اعتماد کیا اور 14 نشستیں دیں، وہاں کے مسائل کا بڑا ذمہ دار ماضی ہے، اگر وقت پر پالیسیاں بنا کر مسائل کے حل کی طرف توجہ دی جاتی تو آج حالات بہت مختلف ہوتے۔

جڑواں شہروں اسلام آباد اور راولپنڈی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے شبلی فراز نے کہا کہ ہمارے ملک کے چند اداروں میں بہت زیادہ بدعنوانی پائی جاتی ہے اور کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) ان میں سے ایک ہے لہٰذا اس میں بہتری لانے کی ضرورت ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز