نشتر اسپتال سے بڑی تعداد میں ڈینگی لاروا برآمد

مشتری ہشیار: ڈینگی نے اسلام آباد،کراچی، لاہور اور پشاور کو لپیٹ میں لے لیا

ملتان کے نشتر اسپتال و یونیورسٹی کے بعد اب میڈیکل سپریٹنڈنٹ کی سرکاری رہائش گاہ سے ڈٰینگی کا لاروا برآمد ہوا ہے۔

ذرائع کے مطابق نشتر اسپتال کی انتظامیہ کی جانب سے ڈینگی سے بچاؤ کے انتہائی ناقص انتظامات کئے گئے ہیں۔

اس سے قبل نشتر یونیورسٹی کے رفیدہ ہال کے کولر سے 300 ڈینگی لاروا برآمد ہوئے تھے جس پر محکمہ صحت نے نشتر اسپتال کو نوٹس جاری کیا تھا۔

یاد رہے پنجاب بھر میں ڈینگی سے متاثرہ افراد کی تعداد میں آئے روز اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔

محکمہ صحت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ کل جڑواں شہروں میں 147 جبکہ ملتان میں ڈینگی کے تین نئے کیسزسامنے آئے ۔

راولپنڈی  کے 86 اور اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے  63 مریضوں میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی ۔جڑواں شہروں میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی مجموعی تعداد 2 ہزار 305 ہوگئی ہے۔

راولپنڈی سے 1 ہزار 479 اور اسلام آبادسے 80 مصدقہ کیسز سامنے آئے ۔ضلع راولپنڈی  کے ہمسایہ اضلاع  چکوال میں  ڈینگی کے مریضوں کی تعداد 10، اٹک میں 8 اور جہلم میں دو ہے ۔سرکاری اسپتالوں میں اضافی وارڈز کے باوجود ڈینگی مریضوں کی جگہ کم پڑگئی ہے۔

پنجاب کے صنعتی شہر فیصل آباد میں اب تک تیرہ افراد اس موذی مرض میں مبتلا ہوئے ہیں ۔

ادھر شمالی صوبے خیبر پختون خوا میں بھی ڈینگی کے وار جاری ہیں ۔ڈینگی کے 54 نئے کیسز رپورٹ سامنے آگئے ۔۔ پشاور سے 27 بٹ گرام سے 8، ایبٹ آباد سے 6، مردان سے 5 اور باجوڑ سے 3 نئے کیسز رپورٹ ہوئے۔

صوبے بھر میں ڈینگی سے متاثرہ افراد کی تعداد گیارہ سو سے تجاوزکرگئی ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز