قانونی ٹیم کا وزیراعلیٰ سندھ کو نیب کے سامنے پیش نہ ہونے کا مشورہ

قانونی ٹیم کا وزیراعلیٰ سندھ کو نیب کے سامنے پیش نہ ہونے کا مشورہ

کراچی : وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو ان کی قانونی ٹیم نے قومی احتساب بیورو(نیب) کے سامنے پیش نہ ہونے کا مشورہ دے دیا۔

دوسری جانب وزیراطلاعات سندھ سعید غنی نے بتایا ہے کہ وزیر اعلی سندھ گیارہ بجے نجی ہوٹل میں ہونے والی تقریب میں شرکت کریں گے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے نیب پیشی سے متعلق صحافی کا سوال ٹال دیا، انہوں نے کہا کہ ابھی تو میں آپ کے سامنے ہوں، 12 بجے ایک اور تقریب میں جاؤں گا، آپ میرے ساتھ ساتھ ہیں دیکھتے ہیں کیا ہوتا ہے۔

گزشتہ روز وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کو نیب نے جعلی اکاؤنٹ کیس میں طلب کیا تھا۔

وزیر اعلیٰ سندھ  کو اس سے قبل نیب اسلام آباد نے بھی جعلی اکاؤنٹس کیس میں طلب کیا تھا جہاں انہوں نے نیب کی پانچ رکنی ٹیم کے سامنے پیش ہو کر اپنا بیان ریکارڈ کرایا تھا۔

نیب نے مراد علی شاہ کو ٹھٹھہ اور دادو شوگر ملزم کیس سے متعلق ریکارڈ سمیت طلب کیا تھا اور ان سے نیب کی ٹیم نے ایک گھنٹے سے زائد وقت تک پوچھ گچھ کی تھی۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ پہلی بار نیب کے سامنے پیش ہوا تاہم مجھے کوئی خاص چیز نظر نہیں آئی جبکہ نیب کو اپنے پورے تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔

یہ بھی پڑھیں وزیر اعلیٰ سندھ کی نیب آفس پیشی، فریال اور حنا ربانی کل طلب

اُن کا کہنا تھا کہ میرے پاس چھپانے کے لیے کچھ نہیں ہے اور نیب تحقیقات کے لیے پوری طرح سے تیار ہوں۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے نیب راولپنڈی طلب کیے جانے پر شکوہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ سب لوگ کراچی میں ہیں اور ہمیں یہاں بلایا جا رہا ہے۔ کراچی بلایا جاتا تو سیکیورٹی سمیت دیگر اخراجات زیادہ نہیں ہوتے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز