وزیر خارجہ شاہ محمود کی امریکی کانگریس میں ڈیموکریٹ پارٹی کے اراکین سے ملاقات

اسلام آباد: امریکی کانگریس میں ڈیموکریٹ پارٹی کے اراکین ہایمز اور مالونے کی وزارت خارجہ میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی ہے۔ 

دفتر خارجہ کی طرف سے جاری اعلامیہ میں کہا گیاہے کہ ملاقات میں پاک امریکہ تعلقات، مقبوضہ جموں و کشمیر کی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر خارجہ نے ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے امریکی کانگریس کے اراکین کو پاکستان آمد پر خوش آمدید کہا۔

اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان امریکہ کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کو خصوصی اہمیت دیتا ہے،دونوں ممالک نے دہشت گردی سمیت خطے کو درپیش چیلنجز کا مل کر مقابلہ کیا ہے۔

مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بہت سے پاکستانی امریکہ میں کثیر الجہتی شعبہ جات میں اپنی خدمات سر انجام دے رہے ہیں،پاکستان نے سیاحوں اور کاروباری حضرات کی سہولت کے لیے “نئ ویزہ رجیم” متعارف کروائی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ نئے پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاری اور سیاحت کیلئے بہترین مواقع موجود ہیں، ہمارے حالیہ دورہ ء نیویارک میں وزیر اعظم عمران خان اور صدر ٹرمپ کے مابین ملاقات کافی سود مند رہی۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ5 اگست کو بھارت کی جانب سے کیے گئے یکطرفہ، غیر قانونی اقدامات نے خطے کو شدید خطرات سے دوچار کر دیا ہے، مقبوضہ جموں و کشمیر میں گذشتہ 58 روز سے مسلسل کرفیو نافذ ہے بھارت کی جانب سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے 80 لاکھ نہتے کشمیریوں کو بھارتی استبداد سے نجات دلانے کے لیے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، پاکستان افغان امن عمل سمیت خطے میں قیام امن کیلئے مشترکہ ذمہ داری کے تحت اپنا کردار ادا کرتا چلا آ رہا ہے۔

مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے طالبان کے ساتھ مذاکرات کا سلسلہ دوبارہ بحال کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے کیونکہ خطے میں پائیدار امن کے لئے مذاکرات ہی واحد راستہ ہیں۔

دفتر خارجہ کے مطابق فریقین  نے  پاک امریکہ دو طرفہ تجارت سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا۔

یہ بھی پڑھیں: مودی سرینگر میں کشمیریوں سے خطاب کر کے دکھائے، شاہ محمود قریشی

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز