خیبرپختونخوا: اسکول طالبات کو برقع پہنانے کے لیے سرکاری فنڈز سے خریداری

خیبرپختونخوا: اسکول طالبات کو برقع پہنانے کے لیے سرکاری فنڈز سے خریداری

مردان: صوبہ خیبرپختونخوا میں سرکاری اسکولوں کی طالبات کو برقعے پہنانے کے لیے سرکاری فنڈ نے خریداری کرلی گئی۔

سعودی عرب: خواتین سیاحوں پر عبایا پہننے کی لازمی پابندی ختم

ہم نیوز کے مطابق خیبرپختونخوا کے علاقے مردان رستم میں واقع چینہ کے اسکول کی طالبات میں 90 برقعے تقسیم کیے گئے ہیں، طالبات میں تقسیم کرنے کے لیے برقعوں کی خریداری ضلع کونسل کے فنڈز سے کی گئی ہے۔

ہم نیوز کے مطابق سابق رکن ضلع کونسل مظفر شاہ کا کہنا ہے کہ مردان کی علاقائی روایات کے پیش نظر پردہ کرنے کے لیے طالبات کو برقعے دیے گئے ہیں۔

باچا خان یونیورسٹی چارسدہ میں طلباء اور طالبات  کے اکھٹے گھومنے پر پابندی

صوبہ کے پی میں گزشتہ دنوں سرکاری اسکول کی طالبات کے لیے پردہ لازمی قرار دینے کا اعلامیہ محکمہ تعلیم نے جاری کیا تھا جس کا نوٹس لیتے ہوئے وزیراعلیٰ محمود خان کے احکامات پراسے فوری طور پر واپس لے لیا گیا تھا۔

صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی کا اس ضمن میں کہنا تھا کہ صرف ایک ضلع میں والدین کی مرضی پر اعلامیہ جاری کیا گیا تھا۔ انہوں ںے کہا کہ پردہ مذہب کا حصہ ہے لیکن زبردستی لاگو نہیں کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے واضح کیا تھا کہ صوبہ کے پی میں طالبات کے لیے چادر یا عبایا لازمی قرار دینے کی کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔ انہوں نے ذرائع ابلاغ کو بتایا تھا کہ متعلقہ اسکولوں کو جاری کردہ اعلامیہ واپس لینے کی ہدایت کر دی گئی ہے۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز