خواتین کی نازیبا وڈیو بنانے والے میاں بیوی گرفتار کرلئے گئے

لاہور: پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں خواتین سے زیادتی کے بعد انکی نازیبا ویڈیو بنانے کا اسکینڈل منظر عام پر آگیاہے۔ موہلنوال گاؤں میں میاں بیوی کا متعدد خواتین کی زیادتی کے دوران  نازیبا ویڈیوز بنانے کا انکشاف ہو اہے ۔

متاثرہ خاتون کی درخواست پر میاں بیوی کے خلاف تھانہ سندر میں مقدمہ درج کرکے ملزمان کو گرفتار کرلیا گیاہے۔

خاتون نے پولیس کو بیان دیا ہے کہ ملزم کی بیگم نے گھر بلایا ۔اس کے بعد اس خاتون کے شوہر نےاسے  زبردستی زیادتی کا نشانہ بنایااور ملزم کی بیوی نے اس دوران میری ویڈیو بنائی ۔

ملزمان پر یہ الزام بھی عائد کیا گیا کہ ان لوگوں نے میری نازیبا ویڈیو پر مجھے متعدد بار بلیک میل کیا اور رقم بھی لی ۔

متاثرہ خاتون کے مطابق  انہوں نے ملزم کی بیگم کے فون سے کئی خواتین کی ویڈیوز نکالی گئی ہیں۔ پولیس کو ویڈیوز دکھانے پر مقدمہ درج ہوا ۔

خاتون کی طرف سے  یہ الزام بھی عائد ہو ا ہے کہ ملزم میاں بیوی نے گاوں کی کئی خواتین کی ویڈیوز بنائی ہیں ۔میاں بیوی خواتین کو بلیک میل کررہے ۔

لاہور پولیس نے خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنا کر انہیں بلیک میل کرنے والے میاں بیوی کو گرفتار کر لیا۔

چونیاں میں بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والا ملزم گرفتار

پولیس کے مطابق ملزمہ رضیہ سلطانہ غریب خواتین کو اپنے جال میں پھنساتی تھی اور اس کا شوہر ملزم سلامت علی خواتین سے زبردستی زیادتی کرتا تھا جس کی ویڈیوز ملزمہ بناتی تھی۔

پولیس حکام کا بتانا ہے کہ ملزمان ویڈیوز کے ذریعے خواتین کو بلیک میل کر کے پیسے بٹورتے تھے اور ابتدائی تفتیش میں ملزمان نے متعدد خواتین کی ویڈیوز بنانے کا انکشاف کیا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز