4 نومبر تک صنفی بنیاد پر تشدد کی عدالتیں قائم کریں ، چیف جسٹس پاکستان

سرکاری اسکول میں اعلی تعلیم ، فری یونیفارم اور دودھ کا گلاس دیا جائے، چیف جسٹس پاکستان

اسلام آباد: چیف جسٹس آف پاکستان آصف سعید کھوسہ نے تمام ہائیکورٹس کو 4 نومبر تک صنفی بنیاد پر تشدد کی عدالتیں قائم کرنے کی ہدایت کر دی

اس ضمن میں لا اینڈ جسٹس کمیشن نے تمام ہائیکورٹس کو مراسلہ جاری کر دیا ہے۔

لا اینڈ جسٹس کمیشن کی طرف سے جاری مراسلے میں کہا گیاہے کہ تمام ہائیکورٹس 4 نومبر 2019 تک صنفی بنیاد پر تشدد کی خصوصی عدالتیں قائم کریں۔

سرکاری مراسلے  میں  چیف جسٹس پاکستان کی طرف سے ہدایت کی گئی ہےکہ  ان عدالتوں میں خواتین اور بچوں کو پر سکون اور ساز گار ماحول فراہم کیا جائے۔

مراسلے  کے مطابق صنفی بنیاد پر تشدد کی عدالتوں کے قیام کا مقصد خواتین سمیت کمزرو طبقے کو فوری انصاف فراہم کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: عدالتوں میں مصنوعی ذہانت متعارف کرا رہے ہیں، چیف جسٹس پاکستان

صنفی بنیاد پر تشدد کی خصوصی عدالتیں قائم کرنے کا فیصلہ قومی عدالتی پالیسی ساز کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا تھا۔ صنفی بنیاد پر تشدد کی عدالتوں میں لاہور جوڈیشل اکیڈمی سے تربیت یافتہ ججز تعینات کیے جائیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز