’حکمران این اے ایک سو چھیانوے پر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے نتائج سے خوفزدہ ہیں‘

کراچی : وزیراطلاعات سعید غنی کا کہنا ہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب)نے اعجاز جکھرانی کی غیرموجودگی ان کے گھر پر چھاپہ مارا۔مرد اہلکار بھی اندر گئے۔ ایک سینئر لیڈر اور عہدیدار کے ساتھ یہ رویہ نامناسب ہے۔

وزیر اطلاعات سندھ نے کہا کہ نیب حکومتی لوگوں کے خلاف پھرتی نہیں دکھاتی۔ مشیر جیل خانہ نے کہا ہے کہ حکمران این اے ایک سو چھیانوے پر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے نتائج سے خوفزدہ ہیں۔

ادھر سندھ ہائی کورٹ نے مشیر جیل خانہ جات اعجاز جکھرانی کی ضمانت قبل از گرفتاری میں انتیس اکتوبر تک توسیع کردی۔

سعید غنی نے مشیر جیل خانہ جات کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ جو ظلم پر آواز اٹھائے نیب اس کے پیچھے پڑ جاتا ہے۔ احتساب نہیں نیب کے طریقہ کار اور جانبداری پر اعتراض ہے۔

انہوں  نے کہا کہ عمران خان،اسد قیصر،محمود خان،فہمیدہ مرزا ،حسنین مرزا اور دیگر کے خلاف کارروائی نہیں ہوتی۔

وزیراعلی سندھ کے مشیر جیل خانہ جات اعجاز جکھرانی نے کہا کہ ان کے خلاف انکوائری کو ڈھائی سال گزر گئے۔لیکن ثبوت ملے نا سلطانی گواہ۔ حکمران این اے 196 پر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے نتائج سے خوفزدہ ہیں۔

یہ بھی پڑھئے: پی پی کے رکن قومی اسملبی سردار محمد بخش مہر کے خلاف نیب کا گھیرا تنگ

اعجاز جاکھرانی نے  کہا کہ نیب الزام لگانے اور گرفتاری کے بعد ثبوت تلاش کرتی ہے۔ حکومت کا یہی رویہ رہا تو تمام اپوزیشن جماعتیں ایک نکتے پر متفق ہوجائیں گی۔

دوسری طرف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے معاملے میں سندھ ہائی کورٹ نے مشیر جیل خانہ جات اعجاز جکھرانی کی ضمانت قبل از گرفتاری میں انتیس اکتوبر تک توسیع کردی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز