اشتعال انگیز تقاریر،بانی ایم کیو ایم اور پارٹی کی نیا

ایم کیو ایم کے بانی الطاف حسین لندن میں گرفتار

فائل فوٹو

کراچی: اشتعال انگیز تقاریر نے بانی ایم کیو ایم الطاف حسین  اور پارٹی کی نیا کو بیچ منجھدار میں لا کے چھوڑ دیا ہے ، بانی ایم کیوایم  کو رواں سال گیارہ جون کو  بھی اشتعال انگیز تقریر کیس میں گرفتار کیا گیا۔آج وہ ضمانت میں توسیع کے لئے  تیسری بار برطانوی پولیس اسٹیشن پہنچے  تو ان پر فرد جرم عائد کردی گئی۔

اسی  اشتعال انگیز  تقریر سے بھڑکنے والی آگ نے ایم کیوایم  کے اتحاد کو بھی جلا کر راکھ کردیا ۔ بانی ایم کیوایم کی مضبوط گرفت میں  ایک  ایم کیوایم  آج کئی  ٹکڑوں میں  بٹ چکی ہے ۔

ایم کیو ایم کے بانی کو  رواں برس  11 جون  کو  نفرت انگیز تقریر کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ انہیں لندن کے پولیس اسٹیشن میں رات گزارنا پڑی تھی۔بعد میں ان کی ضمانت ہوگئی۔ ضمانت میں توسیع کے لئے    وہ  4 ماہ میں تیسری بار آج  برطانوی پولیس کے سامنے پیش ہوئے۔

12  ستمبر کو  آخری بار وہ ضمانت ختم ہونے پر سدک پولیس اسٹیشن میں پیش ہوئے تھے۔بانی ایم کیوایم پر  22 اگست 2016 کوکراچی میں اشتعال و نفرت انگیز تقریر کرکے عوام کو  تشدد پر اکسانے کا الزام ہے۔

اشتعال انگیز تقریر کے بعد  دوسری جانب  پارٹی  کا زوال شروع ہوگیا۔ پارٹی  ہیڈآفس نائن زیرو سمیت پارٹی دفاتر سیل کردیئے گئے۔ جن میں سے بیشتر اب تک بند ہیں۔

بانی ایم کیوایم سےپارٹی  قائدین نے راہیں جدا کرلیں اور ڈاکٹر فاروق ستار نے پارٹی کی قیادت  سنبھالی ۔اس طرح پارٹی دو حصوں ایم کیوایم لندن اور ایم کیوایم پاکستان  میں  بٹ گئی لیکن شروع سے ہی فاروق ستار اور رابطہ کمیٹی ارکان کے درمیان اختیارات کے معاملے پر  رنجشیں  جاری رہیں۔

3 مارچ 2018سینیٹ  انتخابات کے دوران  پارٹی میں نووارد کامران ٹیسوری کو ٹکٹ دینے کے معاملے پر  یہ خلیج  انتہا کو پہنچ گئی۔  اور ایم کیوایم کے ایک نئے دھڑے  نے جنم لیا۔

متحدہ قومی موومنٹ  پاکستان بہادرآباد اور پی آئی بی گروپ وجود میں آئے۔ بعد میں پارٹی قیادت کی جنگ  الیکشن کمیشن پہنچی۔26مارچ 2018 کو الیکشن کمیشن نے فاروق ستار کو ایم کیوایم کنونیر شپ سے ہٹا دیا۔

یہ بھی پڑھیے: نفرت انگیز تقاریر، بانی ایم کیو ایم پر فرد جرم عائد

فاروق ستار نے اسلام آباد ہائی کورٹ کا در کھٹکھٹایا تو 29 مارچ کو  عدالت نے فاروق ستار کو  ایم کیو ایم کی کنوینر شپ پربحال کردیا لیکن نظرثانی اپیل پر  عدالت عالیہ نے  الیکشن کمیشن  کے فیصلے کے خلاف فاروق ستار کی اپیل مسترد کرتے ہوئے  خالد مقبول صدیقی کو  ایم کیوایم کا کنوینئر قرا ر دیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز