نیب لاہور کی ریکوریوں سے متعلق مفصل رپورٹ جاری

نیب اور زین ملک کے درمیان پلی بارگین کا عمل شروع 

فوٹو: فائل

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور نے گزشتہ اڑھائی سالوں کی کارکردگی رپورٹ جاری کردی ہے۔

رپورٹ کے مطابق نیب لاہور نے اکتوبر دو ہزار سترہ سے تاحال مجموعی طور پر ایک کھرب چھ ارب روپے کی ریکوری کی ہے جس میں چھ ارب سنتالیس  کروڑ روپے سے زائد رقوم کی پلی بارگین شامل ہے۔

نیب لاہور بیورو نے اپنے ادارے کا گزشتہ 17 سال کی کارکردگی کا ریکارڈ توڑتے ہوئے اکتوبر 2017 سے تاحال مجموعی طور پر 1 کھرب 6 ارب روپے کی ریکوری ممکن بنادی ۔

ریکوری میں رقوم کی صورت میں ڈائریکٹ اور پراپرٹی و دیگر کی صورت میں انڈائریکٹ ریکوری شامل ہے۔

اڑھائی سال کے دوران مجموعی طور پر ہاؤسنگ سیکٹر میں 14 ریفرنس دائر کیے گئے جب کہ زیر تفتیش 62 کیسز میں سے 40 کیسز کو پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ اڑھائی سال کے دوران غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے 54304 متاثرین کیلئے کی پلی بارگین ممکن بنائی گئی جب کہ ڈی جی نیب لاہور کی سربراہی میں 26 ارب کی رقوم صرف ہاؤسنگ سیکٹر میں ملزمان سے برآمد کرائی جا چکی ہیں، 51 ارب روپے مالیت کی بلواسطہ ریکوری پر عمل درآمد بھی کرایا جا چکا ہے۔

نیب لاہور کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق اکتوبر 2017 سے اگست 2019 کے دوران نیب پراسیکیوشن ونگ نے 32 ارب روپے مالیت پر مشتمل 14 ریفرنسز احتساب عدالتوں میں دائر کیے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز