آزادی مارچ میں شرکت کیلیے ن لیگ نے تیاریاں شروع کردیں

آزادی مارچ میں شرکت کیلیے ن لیگ نے تیاریاں شروع کردیں

لاہور: جمیعت علماء اسلام (ف) کے آزادی مارچ میں شرکت کے لیے پاکستان مسلم لیگ ن نے تیاریاں شروع کردیں ہیں۔

ذرائع کے مطابق اس ضمن میں مسلم لیگ نون پنجاب کی نومنتخب تنظیم کا پہلا اجلاس لاہور میں جاری ہے جس میں 31 اکتوبر کو ہونے والے جلسے کے لیے عہدیداروں کو ذمہ داریاں سونپی جائیں گی۔

اجلاس میں تمام عہدیداروں کو اپنے حلقے سے بندے لانے کا ٹاسک دیا جائے گا اور حکومت کے کریک ڈاؤن سے بچنے کے لیے حکمت عملی بنائے جائے گی۔

اجلاس میں شرکت کے لیے پنجاب کے مختلف اضلاع کے صدور و سیکریٹری ماڈل ٹاؤن پہنچنا شروع ہو گئے ہیں۔

یاد رہے چند روز قبل  پاکستان مسلم لیگ ن نے شہباز شریف کی قیادت میں منعقدہ اجلاس میں مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ میں شرکت کا فیصلہ کیا تھا۔

لاہور ہونے والے اجلاس میں ن لیگی رہنماؤں نے تین مختلف آپشنز پر غور کیا، کچھ رہنماؤں کا خیال تھا کہ حکومتی لاٹھی چارج کی صورت میں حالات بگڑے تو رینجرز اور فوج آسکتی ہے۔

اسی طرح یہ بھی سوچا گیا کہ دھرنے کے دوران دباؤ بڑھ گیا تو ان ہاؤس تبدیلی کا مطالبہ بھی کیا جاسکتا ہے۔

اجلاس میں اس بات پر بھی سوچا گیا کہ ان ہاؤس تبدیلی پر بات نہ بنی تو قبل از وقت انتخابات کی ڈیڈ لائن لیکر دھرنا ختم ہو گا؟

ذرائع کا کہنا ہے جلاس میں رہنماؤں نے شہباز شریف کو آپشنز دئیے۔ یہ فیصلہ بھی ہوا کہ  شہباز شریف کمر درد کے باعث  بھی لاہور میں ریلی کی قیادت کریں گے ۔

ن لیگ کے صدر شہباز شریف نےاجلاس میں  نواز شریف کا خط پڑھ کر سُنایا ۔ شہبا زشریف نے کہا کہ نواز شریف کا حکم سر آنکھوں پر انہوں نے آزادی مارچ کی حمایت کی ہے تو ن لیگ اس مارچ میں شریک ہوگی۔

پارٹی ذرائع کا کہناہے کہ احسن اقبال اور سینیئر قائدین آزادی مارچ میں اسلام اباد پہنچنے والے قافلوں کی قیادت کریں گے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز