وزیراعلی ہاؤس میں کامیاب مذاکرات کے بعد محکمہ قانون سندھ کے ملازمین کا دھرنا ختم

پاکستان کے جنوبی صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں جوڈیشل انکریمنٹ نہ ملنے پر  احتجاج کرنے والے محکمہ قانون کے ملازمین نے وزیراعلی ہاوس میں کامیاب مذاکرات کے بعد  دھرنا ختم کردیا ہے۔

محکمہ قانون کے ملازمین کا کہنا ہے کہ  سیکریٹری قانو ن نے  گیارہ نومبر تک  نوٹی فکیشن جاری کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ عمل نہ ہوا۔ تو اس سے بڑا دھرنا دیں گے۔

آج کراچی میں پہلے ایکشن فلم چلی ۔ پھرمذاکرات ہوئے اور بات بن گئی ۔آٹھ سال سےجوڈیشل انکریمنٹ نہ ملنے پر سراپا احتجاج محکمہ  قانون کے ملازمین  نے دھرنا ختم کردیا۔سندھ ہائی کورٹ میں کیس کی سماعت کے بعد محکمہ قانون کے ملازمین نے  وزیراعلی ہاؤس جانے کی ٹھان لی۔ مظاہرین  ریڈ زون میں   پی  آئی  ڈی سی  چوک تک بھی پہنچ گئے۔

اس دوران مشتعل افراد نے  وہاں سے گزرنے والی گاڑی کو روک لیااور سوار کو تشدد کا نشانہ بھی بنایا۔اس دوران پولیس خاموش تماشائی بنی رہی۔

احتجاجی مظاہرین  کا کہنا تھا کہ وہ لاٹھی چارج اور شیلنگ سے رکنے والے نہیں  ہیں۔  وزیراعلی ہاؤس سے اعلی عہدیدار یہاں  نہ آئے ۔ تو وہ بیرئیرز ہٹاکر سی ایم ہاوس  میں داخل ہوجائیں گے۔وہاں موجود ڈی سی ساؤتھ کا کہنا تھا کہ  مظاہرین کو وارننگ دے دی ہے کہ  کسی شہری پر تشدد برداشت نہیں کیا جائے گا۔  مظاہرین کے مطالبات  وزیراعلی ہاوس تک پہنچا دیئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے:انجمن تاجران کی طر ف سے 28اور 29اکتوبر کو ملک گیر ہڑتال کی کال

بعد ازاں   مظاہرین  کو چیف منسٹر ہاؤس  بلایا گیا اور وہاں مذاکرات ہوئے۔ کامیاب مذاکرا ت کے بعد  محکمہ قانون کے ملازمین کا کہنا تھا کہ سیکریٹری قانون نے گیارہ نومبر تک  نوٹی فکیشن جاری کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

احتجاجی مظاہرین نے کہا کہ دھرنا ختم کررہے ہیں۔ لیکن اگر  مقررہ تاریخ تک  مطالبات منظور اور نوٹی فکیشن جاری نہ ہوا ۔ تو اس سے  بڑا دھرنا دیں گے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز