وزیراعلیٰ پنجاب کی نواز شریف کو بہترین طبی سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت

نوازشریف کی شوگر کنٹرول نہیں ہو رہی، ڈاکٹر یاسمین

فائل فوٹو

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے سابق وزیراعظم نوازشریف کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کردی ہے۔

وزیراعلیٰ نے محکمہ صحت اور سروسز اسپتال کی انتظامیہ کو ہدایات جاری کرتے ہوئے احکامات جاری کیے کہ نواز شریف کو اسپتال میں ہر ممکن طبی سہولیات مہیا کی جائیں۔

انہوں نے یہ احکامات بھی جاری کیے کہ نواز شریف کے علاج معالجے کے لیے ان کے ذاتی معالج سے بھی مشاورت کا عمل جاری رکھا جائے۔

عثمان بزدار کا مزید کہنا تھا کہ امید ہے کہ سابق وزیراعظم کے ذاتی معالج اس ضمن میں پورا تعاون کریں گے۔

دوسری جانب سروسزاسپتال میں زیر علاج  سابق وزیراعظم نواز شریف کی طبیعت میں بہتری آئی ہے لیکن ڈاکٹرز کی تشویش تاحال برقرار ہے۔

یہ بھی پڑھیں: نواز شریف کو کچھ ہوا تو عمران نیازی کو قاتل ٹھہرائیں گے، شہباز شریف

اسپتال ذرائع کے مطابق نواز شریف کے پلیٹلٹس(خون میں موجود سفید خلیے) بڑھ کر پچاس ہزار تک پہنچ گئے ہیں۔ میڈیکل بورڈ کا کہنا ہے کہ پلیٹلٹس کا نمبرز کم ازکم ڈیڑھ لاکھ تک ہونا ضروری ہے۔

ہم نیوز کے ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کے پلیٹلٹس کی تعداد ابھی تک تسلی بخش نہیں اور انہیں او پازیٹیو خون کی ضرورت ہے۔اطلاعات ہیں کہ  ڈاکٹرز نے او پازیٹیو خون لگانے کی سفارش کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق نواز شریف کے پلیٹ لیٹس میں خطرناک حد تک کمی ہوئی ہے اور بڑھانے کے لیے میگا یونٹ لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ شب سابق وزیراعظم کو اچانک طبیعت خراب ہونے پر جیل سے اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: ‘نواز شریف کو جیل سے باہر آنے کی کوئی جلدی نہیں ’

ہم نیوز کو ذمہ دار ذرائع نے بتایا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف کے خون میں سفید خلیوں کی رپورٹس غیر تسلی بخش آئی ہے جس کے بعد ڈاکٹروں کے مشورے پر انہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

میاں نواز شریف کی صحت سے متعلق ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ’ٹوئٹر‘ پر آگاہ کیا تھا کہ سابق وزیراعظم کی صحت انتہائی تشویشناک حد تک خراب ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز