سیلیکٹڈ حکومت کو مزید نہیں چلنے دیں گے، بلاول بھٹو زرداری کا اعلان


تھر: چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ہم نااہل حکومت کو گرانے نکلے ہیں اور سیلیکٹڈ حکومت کو مزید نہیں چلنے دیں گے۔

سندھ کے صحرا تھر میں چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تھر میں خطاب کرنا میرے لیے اعزاز کی بات ہے۔ مجھے فخر ہے کہ میری ماں اور آپ کی بہن بے نظیر بھٹو کو ماروی بی بی کا خطاب تھر سے ملا تھا۔ پیپلز پارٹی تھر کی عوام کے لیے 24 اکتوبر کو این ای ڈی یونیورسٹی کے کیمپس کا افتتاح کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ تھر کے لوگ کئی عرصے سے قحط اور مختلف مشکلات کا شکار تھے لیکن اب یہاں ہر جگہ ہریالی ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی نے ہمیشہ عوام کے لیے جدوجہد کی ہے۔ اس ملک میں آئین اور حقوق نہیں تھے جو انہیں ذوالفقار علی بھٹو نے دلائی اور آئین کا سرچشمہ عوام کو بنایا۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ تھر کے صحرا سے پاکستان روشن ہو رہا ہے۔ جب آمروں نے عوام کے حقوق صلب کرنے کی کوشش کی تو بے نظیر بھٹو ان آمروں کے سامنے ڈٹ گئیں اور آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کیں۔

انہوں نے کہا کہ آج آمریت کے پیداوار، سیلیکٹڈ کی حکومت اور ہر عوام کا معاشی قتل عام کیا جا رہا ہے۔ ٹیکس کی وجہ چھوٹے تاجر کا قتل کیا جا رہا ہے۔ تنخواہوں میں اضافہ نہ کر کے سفید پوش طبقے کا قتل کیا جا رہا ہے۔ پینشن میں اضافہ نہ کر کے بزورگوں اور روزگار نہ دے کر نوجوانوں کا معاشی قتل کیا جا رہا ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ آج ہر صوبوں کے حقوق چھینے جا رہے ہیں اور ہر صوبے کے حصے کی رقم بھی چھینی جا رہے ہیں اور کراچی پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔ رابطہ نہروں پر ڈیم بنا کر سندھ کا پانی چوری کرنا چاہتے ہیں۔ یہ پورے صوبے کا معاشی قتل ہو گا جو ہم نہیں ہونے دیںَ گے۔

یہ بھی پڑھیں آزادی مارچ: جے یو آئی کی حکمت عملی تیار، رکاوٹیں ڈالیں تو ملک گیر دھرنے ہوں گے

انہوں نے کہا کہ ہم نے سندھ کی خدمت کی ہے اور مزید خدمت کرنا چاہتے ہیں۔ ہم وفاق سے سندھ کے حقوق چھین کر عوام کو مہیا کریں گے۔ جمہوری حقوق چھین کر ہمارے منہ بند کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ ہم اس نااہل حکومت کو گرانے کے لیے نکلے ہیں اور سیلیکٹڈ کو مزید چلنے نہیں دیں گے۔

متعلقہ خبریں