حکومت سے کامیاب مذاکرت کے بعد خیبر پختونخوا کے ڈاکٹرز نے احتجاج ختم کردیا

پشاور: خیبر پختون خوا میں گزشتہ 30 دن سےزائد جاری ڈاکٹروں کی ہڑتال کے معاملے میں اہم پیشرفت ہوئی ہے ، ڈاکٹرز نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور وزیر دفاع پرویزخٹک  سے مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد  25اکتوبر کو اسلام آباد میں دھرنے کی کال واپس لیکرفوری طورپر احتجاج  بھی ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے ۔

حکومتی مذاکراتی ٹیم میں پرویزخٹک،اسدقیصر،نورالحق قادری شامل تھے، دوسری طرف گرینڈہیلتھ الائنس کی طرف سے3ڈاکٹرمذاکراتی وفد میں شامل ہوئے۔

اس موقع پر وزیر دفاع پرویز خٹک نے کہا کہ ڈاکٹروں کے گرینڈہیلتھ الائنس سے کامیاب مذاکرات ہوئے ہیں۔ ڈاکٹروں کے جائز مطالبات سنے اور عملدرآمد کی یقین دہانی کروائی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ   مطالبات اور مسائل کے حل کے کے لئے کمیٹی قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے، ڈاکٹرز اب کسی بھی دھرنے یا احتجاج کا حصہ نہیں بنیں گے۔ ڈاکٹروں کو قائل کیا گیا ہے کہ وہ سیاسی مہم کا حصہ نہیں بنیں گے۔

جی ایچ اے ڈاکٹر عامر تاج نے اس موقع کہا کہ حکومتی وفد کے ساتھ مذاکرات نتیجہ خیز ثابت ہوئے ہیں،دو گھنٹے تک بات چیت کے بعد صوبے کے بڑوں کی بات مان لی ہے۔

ڈٓکٹر عامر تاج نے  کہا کہ ڈاکٹرز اور محکمہ صحت کے ملازمین کا دھرنا فوری طور پر ملتوی کر دیا گیا ہے،حکومتی وفد نے مسائل کے حل کے لئے وزیراعظم سے بات چیت کی یقین دہانی کروائی ہے۔

یہ بھی پـڑھیے: : کے پی حکومت کا گرفتار ڈاکٹرز اور ہیلتھ ایمپلائز کی غیر مشروط رہائی کا فیصلہ

جی ایچ اے کے ڈاکٹرز نے کہا کہ خوشگوار ماحول میں اپنے مطالبات حکومت کے سامنے رکھے ہیں،حکومت مسائل کے حل کے لئے مذاکراتی عمل کو آگے لے جانے پر متفق ہے، خیبر پختون خوا کے ہیلتھ ملازمین فوری طور پر احتجاج کو موخر کر دیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز