پشاور کا بی آر ٹی منصوبہ اب انوکھی تاریخ رقم کریگا

پشاوربی آرٹی منصوبہ جہاں دوسال میں مکمل نہ ہونے پرتنقید کی زد میں ہے وہیں یہ منصوبہ اب تاریخ میں سنہری الفاظ کے ساتھ خود کو شامل کرنے کے قریب پہنچ گیا ہے۔

تاریخ پر تاریخ ملنے کے باوجود مکمل نہ ہونے والا پشاور کا بی آر ٹی منصوبہ اب انوکھی تاریخ رقم کرنے جا رہا ہے۔ جی ہاں جس منصوبے کے روٹ پر دوسال میں تیز رفتار بسیں چلانے کا خواب پورا نہ ہوسکا اب وہاں تیز رفتار اتھلیٹ دوڑ لگائیں گے۔

پاکستان ایتھلیٹس ایسوسی ایشن کے مطابق ملک میں 7 سال بعد ہونے والی نیشنل گیمز میں  بی آر ٹی روٹ پر 200 ایتھلیٹس میراتھن ریس میں حصہ لیں گے، بی آر ٹی روٹ استعمال کرنے کا فائدہ یہ ہو گا کہ شہر کی ٹریفک کو بند نہیں کرنا پڑے گا۔

حکام کے مطابق میراتھن ریس کے لیے 42 کلومیٹر کا روٹ درکار ہے جس کے لیے نوشہرہ تا پشاور جی ٹی روڈ کو بھی زیرغوررکھا گیا تھا تاہم سیکورٹی اور ٹریفک نہ روکنے کے لیے بی آر ٹی روٹ ہی حتمی طور پر استعمال ہوگا۔

یہ بھی پڑھیے: پشاور: بی آر ٹی منصوبے میں ناقص میٹریل کے استعمال کا انکشاف

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز