پی پی پی کا زرداری کے علاج کیلئے نجی میڈیکل بورڈ کا مطالبہ

سابق صدر آصف علی زرداری کی طبیعت نہ سنبھل سکی

فوٹو: فائل

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) ن سابق صدر اور پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے علاج کیلئے نجی میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کا مطالبہ کردیا۔

پیپلزپارٹی کی جانب سے اڈیالہ جیل کے حکام کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ نجی میڈیکل بورڈ کا مطالبہ سرکاری ڈاکٹرز کی بورڈ کی سفارشات کی روشنی میں کیا گیا ہے۔

خط کے متن میں کہا گیا ہے کہ سرکاری ڈاکٹرز کے بورڈ نے رپورٹ میں آصف زرداری کی صحت کو لاحق سنجیدہ مسائل کی نشاندہی کی ہے، خاندان اور پارٹی کے اطمینان کیلئے نجی ڈاکٹرز اور ماہرین کا بورڈ بنایا جائے۔

خط میں کہا گیا کہ حکومت کے بنائے گئے بورڈ نے آصف زرداری کی صحت کے حوالے سے خطرے کا اظہار کیا ہے۔

سرکاری بورڈ کے مطابق صدر زرداری کی شریانوں میں خون کا جمنا ان کی زندگی کیلئے خطرناک ہے۔

پیپلزپارٹی نے خط میں تشویش کا اظہار کیا کہ آصف زرداری کا شوگر لیول بھی خطرناک حد تک اوپر نیچے ہو رہا ہے اور اس کا کنٹرول نہ ہونا آصف زرداری کی زندگی کیلئے خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔

سرکاری بورڈ نے جیل میں ہڈیوں کی بیماری وجہ سے مناسب بستر نہ ملنے سے پیدا مسائل کا بھی ذکر کیا ہے، آرتھو بیڈنگ نہ ملنے کی وجہ سے آصف زرداری کی کمر کا دیرینہ مرض شدت اختیار کر گیا ہے۔

خط میں کہا گیا کہ سرکاری بورڈ نے اپنی رپورٹ میں زرداری کے علاج کیلئے نیورولاجسٹ کی مدد لینے کی بھی سفارش کی ہے۔

ترجمان بلاول بھٹو زرداری کے مطابق علاج معالجے کی مناسب سہولت ہر شخص یا قیدی کا بنیادی حق ہے، قانون ہر شخص اور قیدی کے علاج معالجے کی ضمانت دیتا یے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ آصف زرداری کے علاج کا مطالبہ کوئی رعایت نہیں بلکہ قانونی حق ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز